جموں وکشمیر:کل جماعتی میٹنگ میں مکمل ریاست کی بحالی اور اسمبلی الیکشن کرانے کامطالبہ

نئی دہلی:وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ کل جماعتی میٹنگ میں شامل بیشتر سیاسی جماعتوں نے جموں و کشمیر میں مکمل ریاست کی بحالی اور جلد ہی اسمبلی انتخابات کے انعقاد کا مطالبہ اٹھایا۔اس میٹنگ کے بعد سابق نائب وزیر اعلی اور بی جے پی کے لیڈر کاویندر گپتا نے صحافیوں کو بتایا کہ وزیر اعظم نے تمام سیاسی جماعتوں کو یقین دلایا کہ جیسے ہی حد بندی کا عمل ختم ہوگا، مکمل ریاست اور اسمبلی انتخابات کی بحالی کا عمل شروع کردیا جائے گا۔پیپلز کانفرنس کے لیڈر اور سابق نائب وزیر اعلی مظفر حسین بیگ نے بھی کہا کہ مرکز نے میٹنگ میں ایک یقین دہانی کرائی ہے کہ انتخاب کا عمل جلد ختم ہونے کا عمل ختم ہوتے ہی شروع کردیا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ بیشتر سیاسی جماعتوں نے اجلاس میں مکمل ریاست کی بحالی اور اسمبلی انتخابات کے انعقاد کا مطالبہ اٹھایا۔اجلاس کے بعد اپنی رہائش گاہ پر صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کانگریس کے سینئر رہنما اور سابق مرکزی وزیر غلام نبی آزاد نے کہا کہ 5 اگست کو آرٹیکل 370 کو منسوخ کرنے کے دوران مرکز کی جانب سے یہ یقین دہانی کرائی گئی تھی کہ ریاست جموں و کشمیر کو مناسب وقت پر بحال کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ ہم نے کہا ہے کہ مکمل ریاست کو بحال کرنے کا وقت آگیا ہے، اب بھی امن ہے اور انتخابات کے انعقاد کے لئے اس سے بہتر وقت نہیں ہوسکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر حکومت جمہوریت کو مضبوط بنانے کی بات کرتی ہے تو اسے فوری طور پر ریاست میں اسمبلی انتخابات کرانے چاہئیں۔