Home قومی خبریں پچھلے تین ماہ سے تنخواہ نہ ملنے پر ہندو راؤ کے ڈاکٹر علامتی ہڑتال پر

پچھلے تین ماہ سے تنخواہ نہ ملنے پر ہندو راؤ کے ڈاکٹر علامتی ہڑتال پر

by قندیل

نئی دہلی:دہلی کے ہندو راؤ اسپتال کے ریزیڈنٹ ڈاکٹروں نے بدھ کے روز پچھلے تین ماہ سے عدم ادائیگی کے معاملے کو اٹھاتے ہوئے مظاہرہ کیا اور ایک علامتی غیر معینہ مدتی ہڑتال پر چلے گئے۔ اسپتال کے مرکزی دروازے پر ڈاکٹروں کے ایک گروپ نے ہاتھوں میں پلے کارڈ لیے اور ان کے مطالبات کے حق میں نعرے لگائے۔ اس مظاہرے میں اسپتال کی نرسیں بھی ان کا ساتھ دے رہی ہیں۔ دہلی میں ہندو راؤ اسپتال 900 بستروں پر چلنے والا سب سے بڑا اسپتال ہے اور اس وقت کووڈ 19 کے مریضوں کے علاج کے لئے وقف ہے۔ اسپتال کے بہت سے کارکنان کورونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں۔ اسپتال کے ریذیڈنٹ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے صدر ابیمانیو سردانہ نے کہاکہ ہم انتظامیہ کو اپنی آواز دینے کے لئے علامتی غیر معینہ مدت کی ہڑتال پر ہیں۔ انتظامیہ نے اب تک ہماری اپیل پر دھیان نہیں دیا۔ اس کے ساتھ آن لائن احتجاج بھی درج کیا جارہا ہے لیکن کوئی بھی ہماری بات نہیں سن رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ اس کورونا وائرس سے مریضوں کے علاج کے لئے تیار ایک ہسپتال ہونے کی وجہ سے اس سروس پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر اسی وقت مظاہرے میں شامل ہوتے ہیں جب وہ ڈیوٹی پر نہیں ہوتے ہیں۔ سردانہ نے کہاکہ ہم بھی انسان ہیں، ہمارے کنبے بھی ہیں، ہم اس وبا میں انسانیت کیلئے اپنی جان کو خطرے میں ڈال رہے ہیں، کیا ہمارا تنخواہ طلب کرنا بہت زیادہ ہے؟۔شمالی دہلی کے میئر جئے پرکاش نے حال ہی میں کہا تھاکہ ہم اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہے ہیں۔

You may also like

Leave a Comment