پہلی نظر ـ خلیل جبران

ترجمہ: نایاب حسن

یہ زندگی کی بے خبری و باخبری کے مابین ایک باریک خطِ فاصل ہے، یہ وہ شعلۂ اولیں ہے، جس سے روح کے خلیات تک متاثر ہوتے ہیں ، یہ قلبِ انسانی کے گٹار کے پہلے تار سے اٹھنے والا پہلا جادوئی دُھن ہے، یہ وہ لمحۂ مختصر ہے، جو اس دنیا میں روح کے کانوں کو ماضی کے واقعات سناتا ،اس کی آنکھوں پر راتوں کے بھید کھولتا، اس کی بصیرت پر شعور و وجدان کی کارگزاریاں منکشف کرتا اور دوسری دنیا کے دوام و خلود کے اسرار کھولتا ہے، یہ وہ بیج ہے جسے محبت کی دیوی اوپر سے نیچے پھینکتی ہے، پھر نگاہیں اسے دل کی زمین میں بو دیتی ہیں، پھر اس سے جذبات و احساسات نمو پذیر ہوتے ہیں اور روحیں اس کے پھلوں سے بہرہ اندوز ہوتی ہیں ـ
رفیقۂ زندگی کی پہلی نظر میں خالقِ کائنات کے قول "کن "جیسی تایثر ہوتی ہےـ

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*