نتیش کمار تھک چکے،بہار پر ان کا کنٹرول نہیں ہے،تیجسوی یادو کا طنز

پٹنہ:پٹنہ میں انڈیگو اسٹیشن کے سربراہ روپیش سنگھ کے قتل کے بعد تیجسوی یادو منظر عام پر آئے ہیں ۔ اس قتل کے حوالے سے انہوںنے راست طورپر نتیش کمار اور بی جے پی کو نشانہ بنایا ہے۔ قائد حزب اختلاف تیجسوی یادو نے کہا ہے کہ سی ایم نتیش کمار اب مکمل طور پر تھک چکے ہیں ، بہارپر ان کا کنٹرول نہیں ہے ۔ محکمہ داخلہ کنٹرول کرنے سے باہر ہے۔ اسی دوران جب تک ریاست میں سیکڑوں قتل ، اغوا، عصمت دری ، اجتماعی عصمت دری نہیں ہوتی ، وزیراعلی نتیش کمار اور ان کے ساتھیوں کو نیند نہیں آتی ہے ، بہار میں اب ڈبل انجن حکومت ناکارہ ہوچکی ہے۔تیجسوی یادو نے کہا کہ ریاست میں جرائم کا گراف مسلسل بڑھتا جارہا ہے، جو فکرانگیز ہے۔ سب سے مضحکہ خیز بات یہ ہے کہ بی جے پی اپوزیشن کے ساتھ ساتھ سوالات بھی اٹھاتی ہے ، وہ سوال پوچھ کر خود کی ذمہ دارس سے دامن جھاڑ لیتی ہے ۔نتیش کمار منتخب اور نامزد وزیر اعلیٰ ہیں، بی جے پی والوں نے انہیں منتخب اور نامزد کیا ہے۔ پہلی بار بہار میں دو نائب وزیر اعلی تشکیل دیے گئے ہیں۔ تیجسوی یادو نے پی ایم مودی کی کھینچائی کرتے ہوئے کہا کہ اب روپیش جی کے کنبے کے لوگ چٹھ کیسے منائیں گے ۔ الیکشن کے دوران پی ایم کہتے تھے کہ اگر کچھ ہوتا ہے توکہہ دیں کہ اس کا بیٹا دہلی میں بیٹھا ہے، اب وہ بیٹا کیا کر رہا ہے؟ اب جنگل راج کا راجکمار کون ہے؟ وزیر اعظم کو وزیراعلیٰ تیش کمار سے پوچھ گچھ کی جانی چاہئے، اس معاملہ پر کارروائی ہونی چاہئے۔ روپیش سنگھ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ وہ اکثر پٹنہ ایئرپورٹ پر ملتے تھے،ہماری ایک طویل مدت سے شناسائی تھی، وہ نرم مزاج اور خوش مزاج انسان تھے ۔ کیا یہ ستم نہیں ہے کہ لوگوں کو گھر میں گھس کر گولی مار ی جارہی ہے۔ خیال رہے کہ روپش کو 15 گولی مار دی گئی ہے۔ قائد حزب اختلاف نے کہا کہ پوش علاقے میں فائرنگ ہو رہی ہے ، لیکن پولیس کاروائی سے عاجز ہے ۔