نیتی آیوگ کے انڈیکس پرلالویادوکاطنز،ڈبل انجن سرکارمیں بہارنیچے سے ٹاپ پر

پٹنہ:بہارکے سابق وزیراعلیٰ اور راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو نے طنزکیاہے ۔بہار کو این آئی ٹی آئی آیوگ کے پائیدار ترقیاتی اہداف (ایس ڈی جی) انڈیکس 2020-21 میں بدترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی ریاست قرار دیا گیاہے۔انہوں نے وزیراعلیٰ نتیش کمار کو نشانہ بنایا۔ لالو پرساد یادو نے ٹویٹ کیا ہے کہ نتیش جی مائنس سے بھرے ہیں۔ انھوں نے ہمارے ذریعہ تعمیر کردہ ہزاروں طبی مراکز بند کردیے ، پھر اسکولوں کو گیرج میں تبدیل کردیا۔ اس کا نتیجہ یہ ہے کہ آج اس کانیتی آیوگ بہار کو نیچے سے اوپر بنا رہا ہے۔ نام نہاد ڈبل انجن (حکومت) بہاریوں کے لیے پریشانی کاانجن بن گیا ہے۔ اپوزیشن لیڈر تیجسوی پرساد یادو نے نتیش کمار کو بھی نشانہ بنایا۔ تیجسوی یادونے ٹویٹ کیا ہے کہ بہارکولگاتار تیسرے سال کے لیے نچلے درجے پر رکھا گیا ہے۔ یہ کاغذ پر بی جے پی-نتیش کی حکومت کے 16 سال کی ترقی کاخلاصہ ہے۔لالو اور تیجسوی یادوکے بیانات کے جواب میں ، جنتا دل یونائٹیڈ کے رہنما اور پارٹی کے ترجمان راجیو رنجن نے کہا ہے کہ اب لالو یادو این آئی ٹی آئی آیوگ پر بات کر رہے ہیں۔ وہ اپنے دور کو بھول گئے جب ملک کے لوگ صرف بہار میں جرائم کی باتیں کر رہے تھے۔انہوں نے کہاہے کہ ہاں ، میں اتفاق کرتا ہوں لیکن اگر بہار کو خصوصی درجہ حاصل ہوتا تو اس کی صورتحال مختلف ہوتی اور بہار کی اس صورتحال کے لیے آر جے ڈی اور کانگریس ذمہ دارہے۔آر جے ڈی کے سینئر رہنماشیوانند تیواری نے کہاہے کہ جھارکھنڈ کی درجہ بندی بہار سے بہتر ہے کیونکہ نتیش نے بہارکے لیے کچھ نہیں کیا۔ نہ اسکول ، نہ انڈسٹری ، نہ سڑک ، پھر بہار کیسے بہتر درجہ بندی حاصل کرے گا۔بی جے پی کے رہنما اور پارٹی کے ترجمان اجیت چودھری نے کہا ہے کہ اب لالو یادو کے پاس کوئی کام نہیں ہے لہٰذا وہ غیرضروری گیان دے رہے ہیں۔ مجھے لگتا ہے کہ وہ اپنا اصول بھول گئے اور جب ان کی ناخواندہ اہلیہ بہار کی وزیراعلیٰ بنیں تواس وقت کیا ہوا؟