نجی اسپتالوں میں کورونا علاج ہوا سستا، وزارت داخلہ نے قیمت طے کی

نئی دہلی:دہلی میں کورونا سے متاثرہ افراد کے علاج معالجے میں نمایاں کمی کی گئی ہے۔ وزارت داخلہ نے ڈاکٹر وی کے پال کمیٹی کی سفارشات پر عمل درآمد کیا ہے۔ اس کے مطابق اب نجی اسپتالوں میں 8 سے 10 ہزار روپے یومیہ آئیسولیشن بیڈ دستیاب ہوں گے۔ اس کے علاوہ 13 سے 15 ہزار روپے یومیہ آئی سی یو بغیر وینٹی لیٹر کے دستیاب ہوں گے۔اس کے علاوہ آئی سی یو کے وینٹی لیٹر روزانہ 15 سے 18 ہزار روپے میں دستیاب ہوں گے۔ اس میںپی پی ای کٹ کی قیمت بھی شامل ہے، پہلے یہ 24 سے 25 ہزار روپے آئیسولیشن کے لیے طے تھی۔ وینٹی لیٹر کے بغیر آئی سی یو کے ساتھ روزانہ 34 سے 43 ہزار روپے اور آئی سی یو وینٹی لیٹر کے ساتھ یومیہ 44 سے 54 ہزار روپے شامل تھی۔ موجودہ شرحوں پر پی پی ای کٹس کی قیمت شامل نہیں تھی۔غور طلب بات یہ ہے کہ وزارت داخلہ نے نجی اسپتالوں میں کورونا علاج کی شرح کے تعین کے لئے ڈاکٹر وی کے پال کمیٹی تشکیل دی۔ اس کمیٹی نے آج اپنی وزارت داخلہ کو اپنی رپورٹ پیش کی ، جس میں موجودہ شرح کو دوتہائی کمی کرنے کو کہا گیا تھا۔ اس کے بعد وزارت داخلہ نے شرح کو کم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔غور طلب بات یہ ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے دہلی پردیش کے صدر آدیش گپتا اور کانگریس لیڈروںنے نجی اسپتالوں میں علاج معالجے میں خرچ کو کم کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے اس دور میں نجی اسپتال بے انتہا قیمت وصول کرتے ہیں جس کی وجہ سے عام لوگوں کو کافی پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*