نیارکارڈ:مودی نے 5 ماہ میں کوئی بیرونی سفر نہیں کیا

نئی دہلی:کوروناوائرس کوپھیلنے سے روکنے کے لیے دنیا بھر کی حکومتیں لاک ڈاؤن کا طریقہ اپنا رہی ہیں۔بھارت میں بھی 40 دن کالاک ڈاؤن ہے، جس کا آج 29 واں دن ہے۔گزشتہ تقریباََایک ماہ سے ملک کی 135 کروڑکی آبادی گھرمیں قیدہے۔لیکن، لاک ڈاؤن کی وجہ سے صرف عام لوگ ہی نہیں، جو کہیں آ جانہیں پا رہے. بلکہ، وزیر اعظم مودی بھی کہیں آجانہیں پا رہے ہیں۔ وزیر اعظم مودی کو بیرون ملک سے واپس آئے آج 5 ماہ، 6 دن ہوچکے ہیں۔مودی کے وزیر اعظم بننے کے بعد 6 سال میں یہ دوسری بار ہے، جب وہ اتنے وقت تک ملک میں ہی ہیں۔اس سے پہلے مودی نے 2016-17 میں 6 ماہ تک کوئی بیرون ملک سفر نہیں کیاتھا۔اس وقت مودی 12 نومبر 2016 کوجاپان سے واپس آئے تھے اور اس کے بعد 11 مئی 2017 کو سری لنکا کے دورے پرگئے تھے۔ تاہم، اس وقت ملک میں انتخابات بھی تھے۔ مارچ 2017 میں اتر پردیش سمیت 5 ریاستوں میں انتخابات ہوئے تھے۔مودی کو وزیر اعظم بنے تقریباََ 5 سال 11 ماہ ہوچکے ہیں۔مودی نے 26 مئی 2014 کو پہلی بار اور 30 مئی 2019 کو دوسری بار وزیر اعظم کے عہدے کاحلف لیاہے۔ وزیر اعظم کے دفتر کی ویب سائٹ پر موجود معلومات کے مطابق، مودی نے 2014 سے لے کر اب تک 59 بار بیرون ملک کے دورے کیے ہیں۔ اس دوران انہوں نے 106 ملک (ان میں 2 یا اس سے زیادہ دورے بھی) کاسفرکیاہے۔ مودی جب سے وزیر اعظم بنے ہیں،اس کے بعد سے ہر سال 10 سے زیادہ غیر ملکی دورے کرتے ہیں۔دسمبر 2018 میں راجیہ سبھا میں دیے جواب میں اس وقت کے وزیر وزیر مملکت جنرل وی کے سنگھ نے وزیر اعظم کے وزیر دورے پر ہونے والے خرچ کابیورادیاتھا۔ اس کے مطابق، 2018-19 تک مودی کے بیرون ملک سفر پر 2.54.221کروڑ روپے خرچ ہوئے تھے۔ اس کے بعد مودی نے 14 دورے اور کیے، جس میں 70.90 کروڑروپے اورخرچ ہوئے تھے۔ تاہم، اس خرچ میں وزیر اعظم کے طیارے کے انتظامات اور ہاٹ لائن کاخرچ شامل نہیں تھا۔

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*