قومی اردو کونسل اردو زبان کی آن لائن تدریس و ترویج کی تجاویز کو عملی شکل دینے کی کوشش کرے گی:ڈاکٹر شیخ عقیل احمد

قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کے زیر اہتمام آن لائن میٹنگ کا انعقاد
نئی دہلی:کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کے دوران اردو زبان کی تدریس و ترویج کے سلسلے میں غورو خوض اورتبادلہئ خیال کے لیے قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کی جانب سے ’زوم ایپ‘کے ذریعے ایک آن لائن میٹنگ کا انعقاد کیاگیا جس میں مختلف یونیورسٹیز کے تقریبا بیس پروفیسرزاور اسکالرز نے شرکت کی اور اس حوالے سے قیمتی آرا اور تجاویز پیش کی گئیں۔ کونسل کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شیخ عقیل احمد نے میٹنگ کی شروعات میں تمام شرکا کا استقبال کرتے ہوئے موجودہ احوال میں اس میٹنگ کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔ انھوں نے کہا کہ کوروناوائرس کی وجہ سے لوگوں کانظام زندگی پوری طرح بدل چکاہے اور جس قسم کے حالات ہیں اس سے لگتاہے کہ مابعدکورونا کی زندگی بھی ویسی نہیں ہوگی جیسی کورونا سے پہلے تھی۔جیسا کہ ورلڈہیلتھ آرگنائزیشن کی ہدایت ہے کہ اب ہمیں سماجی فاصلہ کو اپنے روزمرہ معمولات کا حصہ بنانا پڑے گا،ایسی صورت میں تعلیم و تدریس سے لے کر دیگر تمام علمی وادبی مصروفیات کی انجام دہی کے لیے ہمیں انٹرنیٹ اور آن لائن طریقہئ کار کا استعمال کرنا ہوگا۔ قومی کونسل جو کہ شروع سے اردو زبان کی ترویج و اشاعت کے لیے پابندِ عہد ہے، اس نے یہ طے کیاہے کہ کورونا اور لاک ڈاؤن کے دنوں میں بھی سماجی فاصلے کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے اپنی سرگرمیاں پہلے کی طرح جاری رکھناہے،اسی سلسلے میں آج کی یہ میٹنگ طلب کی گئی ہے تاکہ ہم ان تدابیر اور طریقہ ہاے کار پر غور کریں،جنھیں برت کر ہم لاک ڈاؤن کے دوران بھی اردو دنیا سے جڑے رہ سکتے ہیں اور اردو کی تدریس و ترویج کے لیے مؤثر اور نتیجہ خیز منصوبے بناکر ان پر عمل در آمد کر سکتے ہیں۔ میٹنگ کی صدارت جواہر لال یونیورسٹی،شعبہئ اردو کے پروفیسر خواجہ محمد اکرام الدین نے کی اور میٹنگ کے دوران اردو سرگرمیوں کی انجام دہی کے سلسلے میں مختلف امور پر تبادلہئ خیالات ہواجس کی روشنی میں درجِ ذیل تجاویز سامنے آئیں:لاک ڈاؤن کی وجہ سے آف لائن کلاسز کا سلسلہ پہلے کی طرح جاری نہیں رکھاجاسکتا اس لیے قومی کونسل اپنے وسائل و ذرائع کا استعمال کرکے ہندوستان کی تمام یونیورسٹیز کے شعبہئ اردوکا نصاب ای بکس کی شکل میں اپنی ویب سائٹ پر اپلوڈ کرے گی، یہ بھی طے کیا گیا کہ مقابلہ جاتی امتحانات کے لیے اردو زبان میں ایک ذخیرہئ سوالات تیار کرکے کونسل کی ویب سائٹ پر اپلوڈ کیا جائے،تاکہ اردو میڈیم سے ان امتحانات کی تیاری کرنے والوں کے لیے سہولت ہو،مختلف درسی و غیر درسی موضوعات پر پروفیسرز و اسکالرز کے لیکچرز آڈیو اور ویڈیو کی شکل میں کونسل کی ویب سائٹ/یوٹیوب چینل / سوشل سائٹس پر ڈالے جائیں تاکہ اردو کے طلبہ و طالبات اور دیگر ضرورت مندان سے استفادہ کرسکیں،کونسل کی تمام مطبوعات،کتابیں اور رسالے پابندی سے اس کی ویب سائٹ پر ڈالے جائیں تاکہ اردو دنیا ان سے بہ آسانی استفادہ کرسکے۔اس پر بھی غور کیاگیا کہ کونسل کی جانب سے لیکچرز اور پروگراموں کی ریکارڈنگ کے لیے ایک سٹوڈیوتیار کیا جائے تاکہ ضرورت کے مطابق وقتافوقتاًدانشوران اور اسکالرز کو مدعو کرکے ان کے لیکچرز ریکارڈ کیے جائیں اور کونسل کے یوٹیوب چینل وغیرہ پر اپلوڈ کیا جائے۔ایک تجویز یہ بھی سامنے آئی کہ چوں کہ آن لائن میٹنگ یا ویڈیو کانفرنسنگ کے لیے فی الوقت دستیاب اپلی کیشنز میں مختلف قسم کی دشواریاں اور پرائیویسی کے بھی مسائل ہیں اس لیے کونسل کے زیر اہتمام خاص طورسے اردو دنیا کے لیے ایک ویڈیو کانفرنسگ اپلی کیشن تیار کروایا جائے جس کے ذریعے اردو طلبہ و اساتذہ اور دانشوران و سکالرز ایک دوسرے سے بہ آسانی مربوط ہوسکیں اور ساتھ ہی مختلف موضوعات پر ویبی نار کی بھی سہولت حاصل ہو۔
جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے پروفیسرخواجہ محمد اکرام الدین،علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے پروفیسر ظفر احمد صدیقی،چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی میرٹھ کے پروفیسر اسلم جمشید پوری اور کشمیر یو نیورسٹی کے ڈاکٹر الطاف انجم پر مشتمل چہار رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جوتمام یونیورسٹیز کے شعبہ ہاے اردو اوراردو اساتذہ و طلبہ کو درپیش مسائل کا باقاعدہ جائزہ لے کر ایک مضبوط اور نتیجہ خیز لائحہئ عمل بنائے گی اور اسے کونسل کو پیش کرے گی۔اسی کی روشنی میں کونسل کی جانب سے عملی اقدام کیا جائے گا۔
اس موقعے پر مذکورہ حضرات کے علاوہ جے این یو سے پروفیسر انور پاشا،جامعہ ملیہ اسلامیہ سے پروفیسر شہزاد انجم،مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی سے پروفیسر نسیم فریس،الہ آباد یونیورسٹی سے پروفیسر شبنم حمید،حیدر آباد سینٹرل یونیورسٹی سے پروفیسر فضل اللہ مکرم،بنارس ہندویونیورسٹی سے پروفیسر آفتاب احمد آفاقی،بہار یونیورسٹی سے پروفیسر حامد علی خان،پٹنہ یونیورسٹی سے پروفیسر جاوید حیات،ایم سی کالج دربھنگہ سے ڈاکٹر مشتاق احمد،رانچی یونیورسٹی سے ڈاکٹر منظر حسین،گوتم بدھ یونیورسٹی نوئیڈا سے ڈاکٹر ریحانہ سلطانہ،راجستھان یونیورسٹی سے ڈاکٹر ناصرہ بصری،ایم جی ایم کالج سنبھل سے ڈاکٹر عابد حسین حیدری،آرٹس، کامرس و سائنس کالج پٹنہ سے ڈاکٹر صفدر امام قادری،ڈاکٹر عقیلہ سید اور محمد عمار نے شرکت کی۔تمام حضرات نے لاک ڈاؤن کے دوران اردو زبان کی تدریس و ترویج کے سلسلے میں کونسل کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شیخ عقیل احمد کی فکرمندی کو قابل تحسین قرار دیااور کہاکہ اس سے اردو دنیا کو اپنی سرگرمیاں آن لائن انجام دینے کی طرف پیش رفت کرنے میں قابل قدر رہنمائی حاصل ہوگی۔کونسل کے ڈائریکٹر کے اظہارِ تشکر کے ساتھ میٹنگ کا اختتام ہوا۔

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*