ناسک آکسیجن لیک سانحہ:وزیر اعلیٰ نے دیا تحقیقات کا حکم دیا ، معاوضہ کا اعلان

نئی دہلی:وزیر اعظم نریندر مودی نے مہاراشٹر کے ناسک میں آکسیجن لیکیج سانحہ کے باعث اسپتال میںزیر علاج 22 افراد کی موت پر غم کا اظہار کیا ہے۔ پی ایم مودی نے کہا ہے کہ ناسک حادثہ حیران کن اور افسوسناک ہے ۔ انہوں نے حادثہ میں ہونے والی اموات پر غم کا اظہار کرتے ہوئے متاثرین کے اہل خانہ سے تعزیت کا اظہار کیا۔ ادھر مہاراشٹرکے وزیر اعلیٰ نے واقعے کی تحقیقات کا حکم دیتے ہوئے معاوضے کا اعلان کیا ہے۔پی ایم مودی نے ٹوئٹ کیا کہ آکسیجن ٹینک میں لیک ہونے کی وجہ سے ناسک اسپتال میں پیش آنے والا حادثہ اندوہناک ہے،مجھے اس حادثہ کے باعث مریضوں کی اموات پر انتہائی دکھ ہے،غم کی اس گھڑی میں متاثرین کے اہل خانہ سے تعزیت پیش کرتا ہوں۔مہاراشٹرا کے گورنر بھگت سنگھ کوشیاری نے بھی حادثے پر غم کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ جاں بحق افراد کے لواحقین سے تعزیت پیش کرتا ہوں اور متاثرہ لوگوں کی جلد صحت یابی کی نیک خواہشات پیش کرتا ہوں ۔اس دکھ کی گھڑی میں سوگوار اہل خانہ سے بھی تعزیت پیش کرتا ہوں۔وہیں مہاراشٹرا کے وزیر اعلی ٰادھوو ٹھاکرے نے اس واقعے کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کا حکم دیتے ہوئے فوت شدگان کے اہل خانہ کے لئے 5-5 لاکھ روپے معاوضہ دینے کا اعلان کیا ہے۔ اس سے قبل مہاراشٹر کے سابق وزیر اعلیٰ دیویندر فڑنویس نے کہا تھا کہ کسی دوسرے اسپتال میں اس طرح کا المناک حادثہ پیش نہ آئے ، اسے یقینی بنایا جانا چاہئے،نیز واقعہ کی تفصیلی تحقیقات کی جانی چاہیے ۔ ضلع مجسٹریٹ سورج ماندھارے نے کہا کہ کارپوریشن اسپتال ذاکر حسین میں آکسیجن کی فراہمی میں رکاوٹ کے باعث 22 افراد ہلاک ہوگئے، یہ مریض وینٹی لیٹر اور آکسیجن پر تھے۔ آکسیجن سپلائی ٹینک میںلیک ہونے کی وجہ سے سپلائی میں خلل واقع ہوا۔