متنازعہ مذہبی رہنما یتی نرسمہانند کے خلاف ایک اور مقدمہ درج

غازی آباد:دادری میں رہنے والے متنازعہ مذہبی رہنما یتی نرسمہانندکے خلاف ایک اور مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ قومی کمیشن برائے خواتین کی شکایت پر غازی آبادمیں ایک کیس درج کیا گیا ہے۔ اس کے خلاف افواہیں پھیلانا ، خواتین کے بارے میں توہین آمیز تبصرہ کرنااور امن کو خراب کرنے کے لیے بیانات دیناکے تحت مقدمہ درج کیاگیاہے۔ یوپی پولیس کے مطابق نرسمہانند کے خلاف آئی پی سی کی دفعات 505 (1) ، 509 ، 504 ، 506 کے تحت مقدمہ درج کیاگیا ہے۔ اس کے خلاف آئی ٹی ایکٹ کی دفعہ 67 کے تحت مقدمہ بھی درج کیاگیاہے۔ سپرنٹنڈنٹ آف پولیس رورل نے بتایاہے کہ یتی نرسمہانند کے خلاف دوایف آئی آر درج کی گئی ہیں۔ خواتین کے خلاف نازیباریمارکس کا یہ معاملہ سوشل میڈیا کے ذریعے پولیس کے علم میں آیا۔ اس معاملے میں ضروری قانونی کارروائی کی جا رہی ہے۔نرسمہانند کا ایک ویڈیو وائرل ہے جس میں وہ بی جے پی لیڈروں کے خلاف نازیبا تبصرہ کر رہاتھا۔ نرسمہانند کو ماضی میں کئی متنازعہ بیانات کے لیے کٹہرے میں کھڑا کیا گیا ہے۔ ماضی میں بھی ان کے خلاف کئی مقدمات درج ہیں۔ اس نے مارچ میں ایک پروگرام کے دوران سابق صدر اے پی جے عبدالکلام پر بھی نازیباتبصرہ کیا۔