ناموسِ رسالت کے تحفظ کے لیے متحد ہوجائیں! ـ ناہید اختر بلوچ

اگر سوئے ہوئے ہیں تو جاگ جائیں، بیٹھے ہوئے ہیں تو کھڑے ہو جائیںاور اگر کھڑے ہیں تو چل پڑیں ۔ہر صورت اور ہر حالت میں احتجاج ریکارڈ کرائیں ۔کیونکہ فرانس نے ایک بار پھر گستاخانہ خاکوں کے مقابلے کا انعقاد کرنے کا نہ صرف اعلان کر دیا ہے بلکہ ان گستاخانہ خاکوں کو عام عمارات پر آویزاں بھی کیا جا رہا ہے اور یہ مذموم فعل فرانس کے وزیراعظم کی سرکاری سرپرستی میں ہو رہا ہے۔لعنت ہو ایسے ملعونین اور ان کے رفقائے کار پر ۔
اس لیے ہر قسم کے مذہبی، مسلکی اور گروہی اختلافات کو پسِ پشت ڈال کر اس مسئلے پر اپنا بھرپور احتجاج ریکارڈ کرائیں۔جس طرح اپنے کسی مسئلے پر سوشل میڈیا کے پلیٹ فارمز کو استعمال کرتے ہیں اسی طرح اس اہم ترین مسئلے کو پوری طاقت کے ساتھ دنیا کے سامنے رکھنے میں اپنا کردار ادا کریں۔کیونکہ یہ ہمارے ایمان کی آزمائش کا وقت ہے۔یہ کہہ دینا کہ ہمارے کہنے سے کیا ہوگا بالکل بھی دانش مندانہ بات نہیں ہوگی ۔
رائٹرز ہیں تو اس پر مدلل انداز میں اپنی ٹائم لائن پر پوسٹس لگائیں ـ شاعر ہیں تو حرمتِ نبی ﷺ پر اشعار لکھیں ۔ اگر فرانس کی کسی قسم کی بھی مصنوعات روزمرہ زندگی میں استعمال کرتے ہیں تو فی الفور اس کا استعمال ترک کر دیں ۔ اگر کوئی کہتا ہے کہ اس سے فرانس کی معیشت پر فرق نہیں پڑے گا تو یہ محض شیطانی وسوسہ ہے ۔
یاد رکھیے قطرے قطرے سے دریا بنتا ہے۔آپ اپنی طرف سے کوشش کریں اور باقی اللہ رب العزت پہ چھوڑ دیں ۔
یاد رکھیے کہ رسول اللہ ﷺ کی حرمت ،عزت اور محبت ہمارے لیے دنیا کی ہر حرمت ،عزت اور محبت سے بڑھ کر ہے اور ہونی بھی چاہیے۔
ہم لاکھ گنہگار سہی مگر پیارے آقا ﷺ کی حرمت پر رتی برابر آنچ نہیں آنے دیں گے ۔ان شاءاللہ العزیز ۔
ہم تو پیارے آقا ﷺ کے ان انمول آنسوؤں کا احسان مر کے بھی نہیں چکا پائیں گے جو انہوں نے خلوت میں اللہ تبارک و تعالی کے حضور اپنی امت کی بخشش کے لیے راتوں کو اٹھ اٹھ کر بہائے ۔
ہماری جان ، ہمارا مال اور ہماری عزت ان پر قربان جنہوں نے ہر ہر موقع پر اپنی امت کو یاد رکھا۔حالانکہ انہیں خبر تھی کہ ان کی امت ان کی محبت کا حق ادا نہیں کر پائے گی،
اس کے باوجود بھی انہوں نے جب بھی دعا کے لیے ہاتھ اٹھائے تو اپنی امت کی بخشش کے لیے گریہ و.زاری کی ۔ جب بھی اللہ رب العزت نے اپنی رحمت کا دریا پیارے آقاﷺ کی سمت موڑا آپ نے اس رحمت کے صدقے صرف اپنی امت کی مغفرت کی بات کی ۔
ہم گنہگار بھلا کہاں ان کی محبت کا حق ادا کر سکتے ہیں ؟ مگر آج جب ان ملعونین نے آزادی رائے کے نام پر پیارے آقا ﷺ کی حرمت پر انگلی اٹھانے کی ناپاک جسارت کی ہے، تو اس انگلی کو کاٹ کر پھینک دینا ہم پر فرض ہے ۔ان کی محبت اور شفقت کا ہم پر قرض ہے ۔ اس لیے دامے، درمے، قدمے، سخنے جیسے بھی ہو اس پر مؤثر احتجاج کریں ـ
اس امت کے بچے بچے پر فرض ہے کہ وہ حرمتِ نبی پر انگلی اٹھانے والوں کے خلاف اٹھ کھڑا ہو اور اس ناپاک انگلی سے ہی ان ملعونین کی آنکھیں پھوڑ دے ۔ ان گستاخانہ خاکوں کے خلاف ہر جگہ مؤثر احتجاج کر کے فرانس کی حکومت کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کر دیں ۔
نیچے وہ تمام ہیش ٹیگز موجود ہیں جن کے ذریعے آپ اس نازک اور اہم مسئلے سے جڑی تمام پوسٹس اور دنیا بھر میں اس پر جاری احتجاج کے متعق جان سکتے ہیں:

#إلا_رسول_الله_يافرنسا #إلا_رسول_الله #رسولنا_خط_أحمر
#ماكرون_يسيء_للنبي #إلا_رسول_الله #يوم_الجمعة #BoycottezLesProduitsFrançais #قاطعوا_المنتجات_الفرنسية #France #Paris #_القصيم #_الرياض #Fransa #FrancaisReveillezVous #france_will_down #Macron

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*