ملک میں ’جمہوریت‘ تلاش کرنی پڑتی ہے، تمام ایجنسیاں حکومت کے نرغے میں:اشوک گہلوت

جے پور:راہل گاندھی کے بعد اب ریاست کے وزیراعلیٰ اشوک گہلوت نے بھی پر ملک میں گم شدہ جمہوریت کے بارے میں بیان دیا ہے۔ مرکزی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے وزیر اعلی نے کہا کہ آج ملک میں جمہوریت کو ڈھونڈناپڑتا ہے۔ جمہوریت کو خطرات لاحق ہیں۔ ملک کے حالات ایسے بن چکے ہیں کہ تمام ایجنسیاں حکومت کے نرغے میں ہیں۔ الیکشن کمیشن ، عدلیہ ، ای ڈی ، انکم ٹیکس جیسے خودمختار ادارے بھی نرغہ میں آچکے ہیں۔ اگر کوئی حکومت سے اختلاف رکھتا ہے ، تو اسے غدار قرار دیا جارہا ہے۔ جمہوریت کے تعلق سے ہندوستان دنیا بھر کے ممالک میں بدنام ہوتا جارہا ہے۔ جمعہ کی صبح گہلوت نے بجاج نگر سے گاندھی سرکل تک علامتی ڈانڈی یاترانکالا۔ گہلوت نے یاتراکے اختتام پر تقریر میں مرکزی حکومت کو نشانہ بنایا۔گہلوت نے کہاکہ براہ کرم مودی جی موہن بھاگوت سے مشورہ کریں، اگر ملک کو ’اکھنڈ ‘ رکھنا چاہتے ہیں تو اسے ’اکھنڈ‘ رکھیں ، اور سیدھے راستے پر آجائیں،ورنہ عوام سیدھے راستے پر لے آئیں گے۔ آج امریکہ سویڈن میں کیا لکھا جارہا ہے۔ آپ 56 انچ کا سینہ دکھاتے ہیں، آپ کی پارٹی تمام ذات پات کوساتھ لے کر چلیں۔ موہن بھاگوت ہندوؤں کی بات کرتے ہیں اور آج بھی انسانیت پر بدنما داغ چھوت چھات کی بیماری ہے۔ موہن بھاگوت اور آر ایس ایس چھوت چھات کے خاتمے پر کام کر یں ۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ کسان تحریک کے تناظر میں جو باتیں امریکہ اوریورپین ممالک کررہے ہیں ، اگر کوئی اسے پڑھ لے تو اس کی آنکھیں کھل جائیں گی۔اشوک گہلوت نے اس دوران کورونا کے بارے میں بھی بات کی۔ انہوں نے کہا کہ کرونا کے سلسلے میں کسی قسم کی کوتاہی نہیں برتی جائے گی۔خیال رہے کہ لاک ڈاؤن مہاراشٹر کے 5 شہروں میں کیا گیا ہے۔ راجستھان میں بھی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ اگر غفلت برتی گئی تو سخت اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ریاست میں اب تک 25 لاکھ ویکسی نیشن ہوچکی ہے۔ راجستھان ویکسی نیشن میں پہلے نمبر پر ہے۔