ملک کے موجودہ حالات میں حکمت و تدبر کے ساتھ اقدام کی ضرورت:مولانا محمد ولی رحمانی

پٹنہ:امارت شرعیہ بہار ، اڈیشہ و جھارکھنڈ کی مجلس عاملہ کی سالانہ میٹنگ آن لائن زوم ایپ پر امیر شریعت مولانا محمد ولی رحمانی کی صدارت میں آج مورخہ۲۹؍ نومبر ۲۰۲۰ءمنعقد ہوئی ۔جس میں امیر شریعت نے اپنے صدارتی خطاب میں فرمایا کہ ملک کے موجودہ حالات انتہائی نا گفتہ بہ ہوتے جا رہے ہیں، اور ایسا محسوس ہو تا ہے کہ آنے والے دنوں میں حالات اس سے زیادہ سخت ہو ں گے ، ان حالات کے تدارک کے لیے حکمت و تدبر کے ساتھ حکمت عملی اختیار کی جائے ،تاکہ اس ملک میں اقلیتی اور پسماندہ طبقات اپنی ملی و تہذیبی شناخت کے ساتھ زندگی گزا ر سکیں ۔ حضرت امیر شریعت نے فرمایا کہ نئی قومی تعلیمی پالیسی اور سی اے اے ، این آر سی اور این پی آر کے نشانے پر صرف یہی اقلیتی طبقات ہیں ، اس کے لیے داخلی و خارجی دونوں طرح کے طریقے کار کو اختیار کرنے کی ضرور ت ہے ، اس کے لیے ملی تنظیموں اور امن پسند سیکولر جماعتوں کو بھی شریک کار کیا جائے۔ قائم مقام ناظم مولانا محمد شبلی القاسمی نے دفتر نظامت کی تفصیلی رپورٹ میں شعبہ جات امارت شرعیہ کی کارکردگی رپورٹ کا خلاصہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ حضرت امیر شریعت کی قیادت ، سرپرستی اور نگرانی میں ہر شعبہ ترقی کی شاہراہ پر گامز ن ہے ، اللہ تعالیٰ حضرت کے مبارک سایے کو تادیر ملت کے سر پر قائم رکھے ، اور انہیں صحت و عافیت کے ساتھ درازی عمر عطا فرمائے۔ مجلس عاملہ کی اس میٹنگ میں گذشتہ عاملہ کی تجاویزکے سلسلہ میں ہونے والی عملی پیش رفت پر سبھی ارکان و مدعووین نے اطمینان اور خوشی و مسرت کا اظہار کیا ،جملہ شعبہ جات کی رپورٹ پہلے ہی اراکین کو فراہم کر دی گئی تھی ، جس کی شرکاء نے تعریف و تحسین کی اور اللہ کا شکر اد اکیا کہ ملت کا یہ کارواں صحیح سمت میں رواں دواں ہے ۔اس موقع پر جن ممتاز شخصیات نے داغ مفارقت دے دی ان کے لیے اجتماعی طور دعائے مغفرت کی گئی ، مجلس عاملہ کی اس میٹنگ میں بنیادی دینی تعلیم کو عام کرنے، قومی تعلیمی پالیسی کے مضر اثرات اور اس کے تدارک پر غور کیا گیا ، نیز سی اے اے ، این آر سی اور این پی آر کے ممکنہ خطرات سے بچنے کی صورت اور آئندہ کے لائحہ عمل پر بھی گفتگو ہو ئی ۔
اجلاس کا آغاز مولانا سہیل احمد ندوی نائب ناظم امار ت شرعیہ کی تلاوت کلام پاک سے ہوا، تجاویز کی خواندگی نائب ناظم امارت شرعیہ مولانا مفتی محمد ثناء الہدیٰ قاسمی نے کی، مولانا مفتی محمد سہراب ندوی نے گذشتہ عاملہ کی کارروائی پر عملی پیش رفت کی رپورٹ پیش کی، دار القضاء کی رپورٹ مولانا مفتی وصی احمد قاسمی نائب قاضی امار ت شرعیہ نے پیش کی۔ نظامت کے فرائض قائم مقام مولانا محمد شبلی القاسمی نے انجام دیے آخر میں حضرت امیر شریعت مد ظلہ کی دعا پر مجلس کا اختتام ہوا۔
اس میٹنگ میں حضرت امیر شریعت مد ظلہ اورمولانا محمد شبلی القاسمی قائم مقام ناظم امارت شرعیہ اور مذکورہ بالا ذمہ داروں کے علاوہ مولانا مفتی نذر توحید مظاہری، جناب مولانا ابو طالب رحمانی ، مولانا محمد شمشاد رحمانی استاذ دارالعلوم وقف دیوبند، جناب ڈاکٹر یسین قاسمی، جناب شہنواز احمد خان صاحب، جناب راغب احسن صاحب ایڈووکیٹ، جناب ایڈ ووکیٹ جاوید اقبال صاحب، جناب ایڈووکیٹ ذاکر بلیغ صاحب ، جناب عرفان الحق صاحب راور کیلا،جناب مولانا مطیع الرحمن سلفی مدنی،جناب محمد مظاہر صاحب، جناب مولانا بد ر احمد مجیبی صاحب، جناب عطاء الرحمن صدیقی صاحب ، جناب منظو ر عالم صاحب اٹکی، جناب انجینئر ابو رضوان صاحب، جناب مولانا اظہار الحق صاحب کنہواں شمسی ، جناب مولانا الحاج محمد عارف رحمانی صاحب ، جناب ظفر عبد الرؤف رحمانی صاحب ، جناب حاجی نیک محمد صاحب مکھیا،جناب مولانا مفتی سہیل احمد قاسمی صدر مفتی امارت شرعیہ ، جناب سمیع الحق صاحب انچارج بیت المال ،جناب مولانا مفتی سعید الرحمن قاسمی مفتی امارت شرعیہ ، جناب مولانا محمد انور قاسمی صاحب قاضی شریعت رانچی، جناب مولانا سعود عالم قاسمی قاضی شریعت جمشید پور، جناب مولانا زبیر احمد قاسمی قاضی شریعت آسنسول، جناب مولانا محمد ابو الکلام شمسی امارت پبلک اسکول رانچی و گریڈیہہ شریک ہوئے اور زیر بحث ایجنڈے پر قیمتی رائیں دیں ۔