محتاط رہیں،کورونا وائرس کے ساتھ رہنے کی عادت ڈالیں:منیش سسودیا

نئی دہلی:ملک میں جاری کورونا بحران کے درمیان دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے لاک ڈاؤن -4 کو لے کر نئے ہدایات جاری کئے ہیں۔کیجریوال نے دہلی میں شرطوں کے ساتھ بس، ٹیکسی، کیب، آٹو، ای رکشہ، پرائیویٹ اور سرکاری دفتروں کو کھولنے کی اجازت دے دی۔دہلی حکومت کی طرف سے دیئے گئے نئے ہدایات پر نائب وزیر اعلی منیش سسودیا کا کہنا ہے کہ دہلی میں رعایت اس امید کے ساتھ دی گئی ہے کہ لوگ خود نظم و ضبط اور احتیاط کے ساتھ دکان پر یا مارکیٹ میں یا اپنے کام پر جائیں گے۔لاک ڈاؤن کھولنا بھی بہت ضروری تھا کیونکہ لوگ پریشان ہو رہے تھے، لوگ سوال پوچھ رہے تھے کہ ہم گھر کس طرح چلائیں، ہم نے اپنی دکان 2 ماہ سے بند رکھی ہے۔چار لوگوں کو ہم نے نوکری دے رکھی ہے۔ان کو تنخواہ کہاں سے دیں۔ ہلی حکومت کے فیصلے پر مشرقی دہلی سے بی جے پی رہنما گوتم گمبھیر نے اعتراض کیا ہے۔اس پر منیش سسودیا نے کہا کہ گوتم گمبھیر جی کے دل میں کچھ اور حل ہے تو وہ بھی ہم کو بتائیں۔ہم نے تو سب سے پوچھا ہے۔انہوں نے بتایا کہ تجاویز کے لئے دہلی کے وزیر اعلی نے گوتم گمبھیر سے بات بھی کی تھی۔اس لاک ڈاؤن کے بعد دہلی کی اقتصادی صورتحال پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے منیش سسودیا نے کہا کہ حکومت کو ڈاکٹر انجینئر، ٹیچرس سب کی تنخواہ دینی ہے۔دہلی کو ہر ماہ تقریبا 3500 کروڑ کی ضرورت ہوتی ہے لیکن گزشتہ ماہ 500-600 کروڑ روپے آئے تھے اور اس مہینے بھی ابھی تک تقریباً400 کروڑ ہی روپے آئے ہیں۔ایسے اگر ٹیکس آئے گا تو ہم تو تنخواہ بھی نہیں دے پائیں گے۔انہوں نے بتایا کہ ریاستوں کو جو مرکز کی جانب سے ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے لئے مدد ملتی ہے اس میں دہلی کو شامل نہیں کیا جاتا ہے۔اس لیے ہمیں دہلی کے راستے نکالنے پڑیں گے۔ دہلی کے وزیر تعلیم منیش سسودیا نے لاک ڈاؤن کے دوران تعلیمی نظام کے نقصان پر بحث کرتے ہوئے کہا کہ فی الحال ہم آن لائن ایجوکیشن سسٹم کو فروغ دے رہے ہیں لیکن آن لائن ایجوکیشن سسٹم پرسنل ایجوکیشن سسٹم کا متبادل نہیں ہو سکتا۔ابھی موسم گرما کی چھٹیاں چل رہی ہیں اسکول ویسے بھی بند رہنے تھے، اب بھی بند رہیں گے۔لیکن موسم گرما کی تعطیلات کے بعد کیا ہوگا یہ ہم جون کے آخر میں اس کا خاکہ تیار کریں گے۔انہوں نے کہا کہ اگر حالات بہتر ہو جائیں گے تو موسم گرما کی تعطیلات کے بعد اسکول کھولے جائیں گے۔