Home خاص کالم مہم ‘رجوع الی القرآن’ کے بعد-ڈاکٹر محمد رضی الاسلام ندوی

مہم ‘رجوع الی القرآن’ کے بعد-ڈاکٹر محمد رضی الاسلام ندوی

by قندیل

 

الحمد للہ جماعت اسلامی ہند کی جانب سے ‘رجوع الی القرآن’ کے عنوان سے چلائی جانے والی دس روزہ مہم (14-23 اکتوبر 2022) اختتام کو پہنچی۔ حلقوں سے ملنے والی رپورٹوں کے مطابق یہ توقّع سے کہیں زیادہ کام یاب رہی ۔ اس پر ہم اللہ تعالیٰ کے حضور سر بہ سجود ہیں اور اس کی توفیق پر شکر بجا لاتے ہیں ۔

مہم کے دوران مختلف پروگرام منعقد کیے گئے : اجتماعات ، خطاباتِ عام ، کارنر میٹنگس ، خواتین کی خصوصی نشستیں ، جمعہ کے خطبے ، مساجد میں مجالس ، دروسِ قرآن ، تجوید کی کلاسز ، اسکولوں میں تقریریں ، قصص القرآن پر آف لائن اور آن لائن کوئز مقابلے ، وغیرہ۔

جماعت کے وابستگان : ارکان ، کارکنان ، متفقین اور ہم دردان میں بہت زیادہ جوش و جذبہ پایا گیا۔ انھوں نے مہم کے دورانیے میں شروع سے آخر تک سرگرمی سے خدمات انجام دیں۔ مہم کے لیے شائع کردہ کتابچہ ‘قرآن سے رشتہ جوڑیں’ اور فولڈر گھر گھر پہنچایا اور مقام پر منعقد ہونے والے پروگراموں میں شریک ہونے کی لوگوں کو دعوت دی۔

یہ چیز خوش آئند ہے کہ ملّت کے تمام طبقات کی طرف سے گرم جوشی کا مظاہرہ کیا گیا۔ انھوں نے پروگراموں کے انعقاد میں بھرپور تعاون کیا اور ہر ممکن سہولیات فراہم کیں ۔اس مناسبت سے ہر حلقے میں قائم علماء کی تنظیم بھی ، جس میں تمام مکاتبِ فکر کی نمائندگی ہے ، سرگرمِ عمل رہی ۔ اس کے ارکان نے عمومی پروگراموں کے انعقاد میں تعاون کیا اور الگ سے بھی اپنے خصوصی پروگرام منعقد کیے۔

ریسورس پرسنس کی حیثیت سے ملّت کی تمام نمائندہ شخصیات کو دعوت دی گئی اور انھوں نے بھی بغیر کسی تحفظ کے پروگراموں میں شرکت کی اور اپنے خطابات سے نوازا۔

قرآن مجید کی اہمیت و عظمت ، اس سے تعلق کی ضرورت اور قرآنی تعلیمات پر مبنی ویڈیو کلپس مرکز جماعت کی جانب سے تیار کیے گئے اور حلقوں کی جانب سے بھی۔ اور انہیں سوشل میڈیا کے ذریعے خوب عام کرنے کی کوشش کی گئی۔ بعض حلقوں میں Led Van کے ذریعے شہروں کے چوراہوں ، جھگّیوں اور قصبات میں ان ویڈیوز کو دکھانے کا اہتمام کیا گیا۔ اس طرح مہم کا پیغام دوٗر دوٗر تک پہنچا۔

اس مہم کے ذریعے الحمد للہ امّت کو یہ پیغام دینے کی کوشش کی گئی کہ قرآن مجید کتابِ ہدایت ہے _ وہ زندگی گزارنے کا سلیقہ سکھاتی اور انسانی مشکلات و مسائل کا حل پیش کرتی ہے ، اس لیے اسے سمجھ کر پڑھنا ضروری _ قرآن کو بے سمجھے بوجھے پڑھنے پر ہوسکتا ہے کہ کچھ اجر مل جائے ، لیکن یہ اس کے مقصدِ نزول سے قطعاً مغایر ہے _ یہ تو اس لیے نازل کیا گیا ہے کہ اس سے زندگیاں روشن کی جائیں اور صحیح رہ نمائی حاصل کی جائے ۔

مہم سے فراغت کے بعد اب جماعت کے وابستگان کی ذمے داریاں بڑھ جاتی ہیں ۔ اس کا Follow up بہت ضروری ہے _ مہم کے دوران جن افراد سے روابط پیدا ہوئے ہیں ان سے مزید روابط استوار کیے جائیں ، جن مساجد میں دروسِ قرآن کا آغاز ہوا ہے ان میں انہیں آئندہ بھی جاری رکھا جائے ، جن مساجد میں خطاباتِ عام کرنے کی اجازت ملی ہے ان میں آئندہ پابندی سے پروگرام کیے جائیں ، جو نمایاں شخصیات رابطہ میں آئی ہیں انہیں آئندہ بھی اپنے پروگراموں میں مدعو کیا جائے ، تجوید کی جو کلاسز شروع کی گئی ہیں انہیں آئندہ بھی جاری رکھا جائے۔ گویا امّت کو قرآن سے جوڑنے کی جو کوششی مہم کے دوران انجام دی گئی ہیں ، مہم کے مکمل ہوتے ہی ان کا خاتمہ نہ ہوجائے ، بلکہ مہم ان سرگرمیوں کے لیے نقطۂ آغاز ثابت ہو۔ اللہ تعالیٰ نے ہمیں امّت سے جڑنے کا بہترین موقع عطا فرمایا ہے ۔ ہمیں اس موقع سے بھرپور فائدہ اٹھانا ہے۔ اللہ تعالیٰ ہمارا حامی و ناصر ہو ۔

You may also like

Leave a Comment