محمد آصف کی مآب لنچنگ پر تمام مجرموں کو سخت سزادی جائے: ملی کونسل

نئی دہلی:آل انڈیا ملی کونسل کے جنرل سیکریٹری ڈاکٹر محمد منظور عالم نے پچھلے دنوں میوات میں پیش آئے ماب لنچنگ کے واقعہ پرشدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے اسے افسوسناک بتایا اور کہا کہ ماب لنچنگ اور ہجومی تشدد کے خلاف قانون بنانے میں سرکار ناکام رہی ہے جس کی وجہ سے جرائم پیشہ لوگوں کے دلوں میں قانون کا ڈر اور خوف نہیں ہے اس وجہ سے اس طرح کی حرکتیں انجام دیتے ہیں اور بے گناہوں کی زندگی ختم کر دیتے ہیں۔ڈاکٹر منظور عالم نے کہا کہ میوات کے محمد آصف کو جس طرح بے دردی کے ساتھ مارا گیا ہے وہ انتظامیہ اور سرکار کی کی ناکامی کا نتیجہ ہے اور پتہ چلتا ہے کہ اس سرکار میں جنگل راج ہیاور جرائم پر لگام لگانے میں انتظامیہ ناکام ہے۔ ملی کونسل کی مانگ ہے کہ محمد آصف کی مآب لنچنگ میں ملوث سبھی کو گرفتار کرکے سخت سزا دی جائے اس کے علاوہ اہل خانہ کوکم ازکم پانچ کروڑ روپے کا معاوضہ دیا جائے۔ڈاکٹر محمد منظور عالم نے میڈیا کو جاری اپنے بیان میں بارہ بنکی میں مسجد توڑے جانے کے معاملے کی بھی سخت مذمت کی اور کہاکہ یہ واقعہ بتاتا ہے کہ ملک میں اب اقلیتوں کی عبادت گاہیں بھی محفوظ نہیں رہ گئی ہیں۔بابری مسجد انہدام کا داغ پہلے سے ہمارے اوپر لگا ہوا ہے اور اب ایک اور مسجد کو الہ آباد ہائی کورٹ کے فیصلہ کے خلاف سرکار نے توڑ دیا ہے جبکہ کورٹ کی طرف سے واضح طور پر کہہ دیا گیا تھا کہ مسجدکو نہ توڑا جائے۔مسجدانہدام کا معاملہ کوٹ کے خلاف ہے ہے اور عدلیہ سے امید ہے کہ اس پر سخت ایکشن لے گی اور یوپی سرکارسے جواب طلب کیا جائے گا۔ ڈاکٹر محمد منظور عالم نے اپنے اخباری بیان میں تمام لوگوں کو کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی صلاح دی اور اس واقعے پر افسوس کا اظہار کیا ہے ایک خاتون کی کرونا سے موت کے بعد ان کے زیورات کو لوگوں نے چھین لیا۔ یہ انتہائی اخلاقی پستی اور انتہائی شرمناک ہے۔