مہاجر مزدروں کودیرسے گھر بھیجنے کی اجازت پر چدمبرم کا مرکز پر نشانہ

نئی دہلی:کورونا وائرس لاک ڈائون کے درمیان پھنسے ہوئے مہاجر مزدوروںاور طالب علموں کو باہر نکالنے کے لئے مرکزی حکومت نے آمدورفت کی اجازت دی ہے۔ اس کے بعد مہاراشٹر، پنجاب سمیت کئی ریاستوں نے پھنسے ہوئے لوگوں کو نکالنے کے لئے خصوصی ٹرینیں چلانے کا مطالبہ کیا ہے۔ ہندوستانی ریلوے نے تلنگانہ سے جھارکھنڈ کے لئے جمعہ کو مخصوص ٹرین بھی چلائی۔ سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم نے خراب تیاری کا الزام لگاتے ہوئے ہفتہ کو مرکز پر نشانہ لگایا۔چدمبرم نے کہا کہ 29 اپریل مہاجر مزدوروں کو ان کے گھر بھیجنے کی اجازت دینے والی مانگ پرکوئی رد عمل نہیں دیا گیا۔ 30 اپریل مہاجرمزدوروںکو لانے جانے کے لئے بسوں کو اجازت ہوگی۔ایک مئی نان اسٹاپ ٹرینوں کی اجازت دی جائے گی۔ دیر آئے درست آئے۔ یہ بیکار سوچ اور غلط منصوبہ بندی کی ایک اور مثال ہے۔کورونا وائرس کے خطرے کو روکنے کے لئے وزارت داخلہ نے 3 مئی کو ختم ہو رہے لاک ڈائون کے دوسرے مرحلے کو آگے بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔ لاک ڈاؤن کا تیسرا مرحلہ 17 مئی چلے گا۔ حکومت نے جمعہ کو اس ضمن میں اعلان کرتے ہوئے نئے ہدایات جاری کئے ہیں۔ موجودہ لاک ڈائون کے مقابلے میں اگلے لاک ڈائون میں کچھ مراعات دی گئی ہیں۔ وزارت صحت نے ملک کے تمام اضلاع میں ریڈ،اورنج اور گرین زون کے مطابق تقسیم کیا ہیں۔ہندوستان میں کورونا وائرس سے اب تک 1218 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ متاثرہ مریضوںکی تعداد 37336 ہو گئی ہے۔ وہیں گزشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا وائرس کے 2293 نئے کیس سامنے آئے ہیں اور 71 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ 24 گھنٹے میں اب تک سب سے زیادہ کیس سامنے آئے ہیں۔