مدھیہ پردیش:سرکاری اسپتال کی بڑی لاپرواہی،اسٹریچر پر 11 دنوں تک پڑی رہی لاوارث لاش

اندور:مدھیہ پردیش کے سب سے بڑے سرکاری اسپتال سے دل دہلادینے والی تصویر سامنے آئی ہے۔ گیارہ دن پہلے ایم وائی اسپتال میں لائی گئی لاوارث لاش اسٹریچر پر رکھے رکھے ہڈیوں کے ڈھانچے میں تبدیل ہوگئی ۔اسپتال اب اس معاملے کی جانچ اور کارروائی کی بات کر رہا ہے۔اسپتال سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر پی ایس ٹھاکر نے کہا کہ ہم نامعلوم لاش ایک ہفتہ کے لئے رکھتے ہیں۔آخری رسومات کے لیے میونسپل کارپوریشن کو فون کیا گیا تھا یا نہیں، اس کی معلومات کی جارہی ہے۔ انچارج کو بھی نوٹس دیا گیا ہے۔ اگر کسی کی لاپرواہی سامنے آئی تو کارروائی کی جائے گی۔ایم وائی اسپتال ریاست کا سب سے بڑا سرکاری اسپتال ہے۔ اندور ضلع کورونا سے سب سے زیادہ متاثر ہے۔ اسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ 21-22 لاشیں روزانہ ان کے مردہ خانے میں آرہی ہیں، جبکہ وہاں صرف 16 فریزر موجود ہیں، ڈاکٹر ٹھاکر نے کہا کہ ہمارے پاس وسائل محدود ہیں۔ ہم فریزر منگوانے کے لئے انتظامیہ کو متعدد بار خطوط لکھ چکے ہیں۔دراصل منگل کے روزجب اسپتال کے احاطے میں بہت زیادہ بدبو آ رہی تھی، تب کسی نے اسٹریچر سے چادر ہٹا ئی تو لاش کے ساتھ انتظامیہ کی ایک مکروہ تصویر سامنے آگئی۔