مودی سرکارکوکالے قوانین و اپس لینے ہوں گے،ابھی توشروعات ہے:راہل گاندھی

نئی دہلی:پنجاب سے کسانوں کا قافلہ اب دہلی پہنچ گیا ہے۔ ادھر کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے بھی ان کسانوں کی حمایت میں ٹویٹ کیا ہے جو زرعی قانون 2020 کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ راہل گاندھی کا کہنا ہے کہ حکومت کوکسانوں کامطالبہ ماننا ہے اور کالے قوانین کوواپس لینا ہوگا۔راہل گاندھی نے ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ وزیراعظم کویہ یاد رکھناچاہیے تھا کہ جب بھی اناسچائی سے ٹکراجاتی ہے تو شکست کھا جاتی ہے۔ دنیا کی کوئی بھی حکومت حق کی جنگ لڑنے والے کسانوں کو نہیں روک سکتی۔ مودی سرکارکو کسانوں کے مطالبات کو قبول کرنا ہوگا اور کالے قوانین کو واپس لینا ہو گا۔ یہ تو صرف آغازہے۔دوسری طرف کسانوں کے احتجاج کو دیکھتے ہوئے دہلی پولیس نے دہلی کے نو اسٹیڈیموں کو عارضی جیل بنانے کے لیے ریاستی حکومت سے درخواست کی تھی۔ لیکن دہلی حکومت نے دہلی پولیس کی اس درخواست کو مسترد کردیا۔دہلی کے وزیر صحت ستیندر جین نے کہاہے کہ مرکزی حکومت کوکسانوں کے مطالبات کو قبول کرناچاہیے۔ کسانوں کا مطالبہ معقول ہے۔ انہوں نے کہاہے کہ کسانوں کو جیل میں نہیں ڈالاجاسکتا۔ لہٰذا دہلی پولیس نے اسٹیڈیم کو عارضی جیل بنانے کے لیے دہلی پولیس کی درخواست مسترد کردی ہے۔