مودی کی میٹنگ میں وزرائے اعلیٰ کوبولنے نہیں دیاگیا

ممتابنرجی کاالزام،ریاستوں کی ضروریات پرکوئی توجہ نہیں دی گئی
کولکاتہ:مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے الزام عائد کیا ہے کہ وزیر اعظم کی کی ورچوئل میٹنگ میں بولنے کی اجازت نہیں ملی ہے۔ انہوں نے کہاہے کہ وہ تمام تیاریوں کے بعد کاغذ کے ساتھ گئیں لیکن انہیں موقع نہیں دیا گیا۔ ممتابنرجی نے کہاہے کہ اجلاس میں وزرائے اعلیٰ کوکٹھ پتلی بنایاگیا۔ ممتابنرجی نے کہاہے کہ وزیر اعظم نے میٹنگ میں کچھ کہا اور اس کے بعد بی جے پی کے زیر اقتدار ریاستوں کے کچھ ڈی ایم نے اپنے نقطہ نظر رکھے اور میٹنگ ختم ہوگئی۔ممتابنرجی نے پوچھا کہ آخر کیا وجہ ہے کہ وزیر اعظم مودی وزرائے اعلیٰ سے خوفزدہ ہیں؟ انہوں نے الزام لگایاہے کہ بہت سے وزرائے اعلیٰ وزیر اعظم کے طرز عمل سے توہین محسوس کر رہے ہیں۔ مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ نے کہاہے کہ وزیر اعظم نے ایک بار بھی ویکسین کی دستیابی ، اسپتالوں میں بستر کی دستیابی یا بلیک فنگس پر کچھ نہیں پوچھا۔ انہوں نے کہاہے کہ ہمیں شرم ہے کہ ان کے ساتھ بھی ایسا سلوک کیاگیاحالانکہ ان کی حکومت نے آج 10 سال پورے کردیئے ہیں۔ممتا بنرجی نے کہاہے کہ ہم نے سوچاکہ ہم ویکسین طلب کریں گے تاکہ سب کو ویکسین دی جاسکے۔انہوں نے کہاہے کہ وزیر اعظم نے اپنی تقریر میں کہا کہ کورونا کم ہوا ہے ، اگر اس میں کمی واقع ہوئی ہے تو پھر اتنی ہلاکتیں کیوں ہو رہی ہیں؟ممتابنرجی نے کہاہے کہ مرکزی حکومت کی جانب سے غفلت برتی گئی ہے۔