مودی کی غلطی سے ملک میں بے قابو ہوا کوروناوائرس:ادھیر رنجن چودھری

نئی دہلی:لوک سبھا میں کانگریس کے لیڈر ادھیر رنجن چودھری نے ملک میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے قہر اور لاک ڈاؤن کے معاملے پر آج ایک بار وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کی حکومت پر نشانہ لگایا۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو فروری میں ہی ملک میں لاک ڈاؤن لگا دینا چاہئے تھا لیکن بی جے پی مدھیہ پردیش کی حکومت کو گرانے میں لگی تھی اور اس کے پاس ملک کے بارے میں سوچنے کا وقت نہیں تھا۔چودھری نے کہا کہ حکومت کو فروری میں ہی لاک ڈاؤن اعلان کرنا چاہیے تھا اور انٹرنیشنل ہوائی جہاز کی خدمات کو بند کرنا چاہئے تھا۔اگر ایسا کیا جاتا ہے تو آج ایسی صورتحال نہیں ہوتی۔ حکومت نے 25 مارچ کو افراتفری میں لاک ڈاؤن نافذ کردیا اور ملک کے لوگوں کو صرف چار گھنٹے کی مہلت دی گئی۔حکومت کی غلطی کا نتیجہ آج پورا ملک بھگت رہا ہے۔اس سے ملک کا سر شرم سے جھک گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم مودی کی غلطی سے ملک میں کورونا بے قابو ہوا ہے۔وزیر اعظم کو بڑا دل دکھاتے ہوئے اپنی اس غلطی کے لئے ملک کی عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔سینکڑوں ممالک میں لاک ڈاؤن ہوا ہے لیکن ہندوستان جیسی صورتحال کہیں نظر نہیں آ رہی ہے۔اگر صحیح وقت پر لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا ہوتا تو آج ملک کی ایسی حالت نہیں ہوتی۔کورونا کے دور میں کانگریس سیاست نہیں کر رہی ہے۔کانگریس نے مزدوروں کو گھر بھیجنے کے لئے یوپی حکومت کو بس دینے کی پیشکش کی تھی۔لیکن یوپی حکومت نے اس پر سیاست کیا۔پہلے صرف بھیجنے کی اجازت دی اور پھر انہیں اتر پردیش کی سرحد میں گھسنے کی اجازت نہیں دی۔طرح طرح کے بہانے بنائے۔