مودی جی نے 21 دن کی بات کی تھی، 166 دن بعدبھی کوروناختم نہیں ہوا:کانگریس

نئی دہلی:سات ستمبر تک ہندوستان کورونا وائرس کے معاملات میں برازیل سے آگے نکل گیا ہے اور دنیا میں سب سے زیادہ کورونا والے ممالک کی فہرست میں دوسرے نمبر پر آگیا ہے۔ اس موقع پر کانگریس نے مودی حکومت پر حملہ کیا۔ کانگریس کے ترجمان رندیپ سورجے والا نے پیر کو پریس کانفرنس کی، جس میں انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے ملک میں کورونا سے لڑنے کے لئے 21 دن کی بات کی تھی، لیکن آج کورونا کو 166 دن گزر جانے کے بعد بھی ملک کورونا کا مہابھارت دیکھ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کے ساتھ جنگ جاری ہے، لیکن کمانڈر ندارد ہیں ۔انہوں نے کہاکہ مودی جی نے 24 مارچ 2020 کو کہا تھا کہ مہابھارت کی جنگ 18 دن جاری رہی ۔ کورونا سے جیتنے میں 21 دن لگیں گے۔مگر 166 دن کے بعد ملک کورونا کا مہابھارت دیکھ رہا ہے۔ لوگ مر رہے ہیں، لیکن مودی جی مور کودانہ کھلا رہے ہیں۔ سرجے والا نے کہا کہ جب روم جل رہا تھا، نیرو بانسری بجا رہا تھا کے طرز پر جب ملک کورونا سے لڑ رہا ہے ،تو مودی جی مور کو دانہ کھلا رہے ہیں۔ انہوں نے لاک ڈاؤن کے بارے میں کہا کہ جس طرح سے لاک ڈاؤن کو نافذکیا گیا اسے ملک کی تاریخ کے سب سے بڑے تغلقی فیصلے کے طور پر جانا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ وزیر اعظم کورونا کیسزمیں اضافے سے لے کر اس سے لڑنے میں ناکامی اور آگے کے چیلنجز کے ہر سوال کا جواب دیں۔