19 C
نئی دہلی
Image default
قومی خبریں

مودی بتائیں،جب ماسک، وینٹی لیٹرکی اضافی ضرورت تھی توبرآمدکیوں کرنے دیاگیا:راہل گاندھی

نئی دہلی: کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے وائرس کے اس دور میں وینٹی لیٹر اور ماسک کی برآمد کو لے کر مودی حکومت پرشدیدحملہ بولاہے۔ انہوں نے ایک نیوزرپورٹ کوٹویٹ کرتے ہوئے لکھاہے کہ عالمی ادارئہ صحت نے تمام ممالک سے وینٹی لیٹر اور ماسک کافی اسٹاک رکھنے کوکہاتھا۔کانگریس لیڈر نے پی ایم مودی سے پوچھا ہے کہWHO کے مشورہ کے باوجود ان چیزوں کو 19 مارچ تک برآمدکی اجازت کیوں دی گئی۔انہوں نے اسے بدعنوانی قرار دیتے ہوئے پوچھاہے کہ یہ کس کی شہ پر ہوا اور کیا یہ مجرمانہ سازش نہیں ہے۔کانگریس کے چیف ترجمان رندیپ سرجیوالا نے بھی انہی الزامات کودوہراتے ہوئے پوچھاہے کہ وائرس سے نمٹنے میں کام آنے والی اشیاء کوبرآمد کی اجازت کس طرح دی گئی۔انہوں نے کہاہے کہ تمام طرح کے ماسک، وینٹی لیٹر اور ماسک بنانے میں کام آنے والی اشیاء کو19 مارچ تک برآمد کرنے کی اجازت دی گئی۔جبکہ عالمی ادارئہ صحت نے وائرس بحران کو دیکھتے ہوئے ان کا اسٹاک بناکر رکھنے کوکہاتھا۔ سرجیوالا نے ٹویٹ میں آگے لکھاہے کہ ان چیزوں کو برآمد کی اجازت دینا مجرمانہ سازش تھی۔سرجیوالانے اس معاملے پر ایک کے بعد ایک کئی ٹویٹ کیے ہیں۔ انہوں نے ویڈیوبھی ٹویٹ کیا، جس میں وہ وزیر اعظم سے ان مواد کی برآمد کو لے کر سوال پوچھ رہے ہیں۔کانگریس کے ترجمان نے ایک ٹویٹ میں حکومت کی طرف سے 19 مارچ کو جاری ایک نوٹیفکیشن کوبھی شیئرکیاہے، جس میں ماسک،وینٹی لیٹر اور ماسک بنانے کے خام مال کی برآمد کوروکا گیا تھا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment