مثالِ غنچہ و شبنم اُداس رہتے ہیں ـ عبدالحمید عدم

مثالِ غنچہ و شبنم اداس رہتے ہیں
چمن کی گود میں بھی ہم اداس رہتے ہیں

ہوا ہی ایسی چلی ہے کہ جی بحال نہیں
وگرنہ ہم تو بہت کم اُداس رہتے ہیں

عجیب حسن ہے اس عنبریں اداسی میں
کسی کے گیسوئے برہم اداس رہتے ہیں

عدمؔ وہ لوگ اداسی سے جن کو رغبت ہو
بڑے خلوص سے پیہم اداس رہتے ہیں

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*