بنگال الیکشن سہ فریقی ہوگا،ایم آئی ایم صرف ووٹ کٹوا:ادھیررنجن چودھری

کولکاتہ:مغربی اسمبلی انتخابات کے لیے سیاسی جماعتوں کے مابین الزامات کا ایک سلسلہ جاری ہے۔ ادھر مغربی بنگال کانگریس کے صدر ادھیر رنجن چودھری نے کہا ہے کہ یہاں ایک خیال ہے کہ ٹی ایم سی اور بی جے پی کے مابین مقابلہ ہوگا۔کانگریس اوربائیں بازوکے اس اتحاد میں ایک اورپہلو بھی ہے۔ میں دعووں کے ساتھ کہہ سکتا ہوں کہ بنگال کا انتخاب سہ فریقی ہے۔ادھیر رنجن چودھری نے کہاہے کہ بی جے پی اور ٹی ایم سی افواہیں پھیلارہی ہیں کہ یہ الیکشن دو طرفہ ہوگا۔ بنگال میں تمام بڑے رہنما ریلیاں نکالیں گے۔ ہمارا کارکن ہر گاؤں اور بوتھ میں لڑرہا ہے۔ادھیر رنجن چودھری نے کہاہے کہ اے آئی ایم ایم بی جے پی کی مددسے چلتی ہے۔ مجلس یہاں صرف ووٹ کٹواہے۔ بہت ساری جماعتوں کے ساتھ بات چیت جاری ہے۔ ادھیر رنجن چودھری نے کہاہے کہ رام کی نظر میں کوئی ہندو نہیں ہیں اور نہ ہی کوئی مسلمان۔ ہمیں جے شری رام سے کوئی اعتراض نہیں ہے۔ انہوں نے کہاہے کہ اگر رام کو انتخابی مسئلہ بنایا جاتا ہے تو رام کی توہین ہوگی۔انہوں نے کہاہے کہ بنگال کی ثقافت ایسی ہے کہ ہم یہاں رام اور کرشنا کو ملاتے ہیں۔ انہوں نے کہاہے کہ رام کے نام پرسیاست نہیں ہونی چاہیے۔