’میٹرو مین‘ کوبھی کیرل میں’ لوجہاد‘نظرآیا،’متوقع وزیراعلیٰ‘ امیدوار احتجاج کے لیے تیار

کوچی:ای سریدھرن،جنہوں نے دہلی میٹرو سے ہر شہرمیں میٹرو کے قیام میں اہم کردار ادا کیا ،میٹرو مین کے نام سے مشہور ہیں۔ای سریدھرن نے اب بھارتیہ جنتا پارٹی میں شمولیت اختیار کرلی ہے اور اچانک سیاست میں آکر سب کو حیران کردیاہے۔بی جے پی میں شامل ہونے کے بعداب وہ اس کی ہی زبان بول رہے ہیں۔ سریدھرن کیرل میں سی ایم کے عہدے کے دعویدار بن گئے ہیں۔ انہوں نے مبینہ لو جہادکے معاملے میں کہا ہے کہ وہ بھی لوجہاد کے خلاف ہیں ، کیونکہ ہندولڑکیوں کو دھوکہ دیا جارہا ہے۔سریدھرن کا کہنا ہے کہ وہ جانتے ہیں کہ کیرل میں لوجہاد ہو رہا ہے۔ جنوبی ریاست میں انتخابات سے قبل ان کے بیان نے ہلچل مچا دی ہے۔ اس بیان کو انتخابی حکمت عملی سے جوڑا جارہا ہے۔بی جے پی وہاں اسے مدعے پرالیکشن لڑسکتی ہے۔ نیوز چینل کو جواب دیتے ہوئے سریدھرن نے کہا ہے کہ لوجہاد۔ہاں ، میں دیکھ رہا ہوں کہ کیرالہ میں کیا ہو رہا ہے۔شادی کے لیے ہندوؤں کو کس طرح دھوکہ دیا جارہا ہے اور وہ کسی طرح سے لو جہادمیں مبتلا ہیں۔ نہ صرف ہندو بلکہ مسلمان ، مسیحی لڑکیوں کوبھی شادی کا جھانسہ دیا جارہاہے۔ای سریدھرن نے کہاہے کہ میں لوجہاد کی ضرور مخالفت کروں گا۔ ان کا یہ تبصرہ ایک ایسے وقت میں آیا ہے جب بی جے پی کی متعدد حکمرانی والی ریاستوں میں مبینہ لوجہاد کی بحث ہو رہی ہے۔ اترپردیش ، مدھیہ پردیش سمیت متعدد ریاستوں میں اس کے خلاف قانون بنائے گئے ہیں۔