مزدوروں کی حالت زار پر عدالت کب جواب طلب کرے گی؟کپل سبل

نئی دہلی:لاک ڈاؤن کے دوران جس طرح سے تارکین وطن مزدور سڑک حادثات میں جاں بحق ہو رہے ہیں اس کے بارے میں بھی حکومت کے خلاف بیان بازی نے شدت اختیار کرلی ہے۔ کانگریس کے سینئر لیڈراور وکیل کپل سبل نے کہاہے کہ 20 لاکھ مزدور پھنس چکے ہیں اور وہ گھر جانا چاہتے ہیں۔ ان کے پاس زندگی گزارنے کا کوئی دوسرا راستہ نہیں ہے۔ وہ روزانہ ایک حادثے میں مر رہے ہیں۔ہفتے کے روز ، ایک سڑک حادثے میں 26 افراد کی موت ہوگئی۔ ٹرین 16 افرادپر گزری۔بچے اپنے گھر نہیں پہنچ پائے۔ عدالت کب جاگے گی اور اس سب کا جواب طلب کرے گی۔کپل سبل نے حالیہ دنوں میں تارکین وطن مزدوروں کو درپیش مشکلات کا ذکر کرتے ہوئے لکھا یہ کہ 20لاکھ مہاجر مزدور پھنسے ہوئے ہیں۔ وہ گھر جانا چاہتے ہیں۔وہ اب انتظار نہیں کرسکتے ہیں۔ ان کے پاس زندہ رہنے کے لیے پیسہ نہیں بچاہے۔ یہ لوگ روز مر رہے ہیں۔ سڑک حادثہ (26) کل بھی ہوا ، ٹرین سے کٹ جانے کے بعد 16 افراد کی موت ہوگئی۔ بچے گھر نہیں پہنچ پائے۔ عدالت کب جاگے گی اوراس سب کا جواب طلب کرے گی۔