مزدوروں کی بہارحکومت سے ناراضگی

این ڈی اے کی حلیف لوجپاکوتشویش،الیکشن کی فکر
نئی دہلی:اس سال بہارمیں الیکشن ہوناہے،ایسے میں این ڈی اے کی حلیف پارٹی فکرمندہے کہ مزدوربہارحکومت سے سخت ناراض ہیں ۔چراغ پاسوان نے کہا ہے کہ بہار کے مزدور بہت ناراض نظر آرہے ہیں ، مجھے شک ہے کہ یہ مزدور بہار حکومت پراعتمادنہیں کھوئیں گے۔میں چاہوں گا کہ مزدور ہماری حکومت اور ہمارے وزیراعلیٰ کا ساتھ دیں ۔انہوں نے بتایاہے کہ ایک ایماندار ساتھی کی حیثیت سے ، میں سی ایم نتیش کمار کو مشورہ دیتا ہوں کہ وہ بات چیت برقرار رکھیں تاکہ مزدوروں کواعتمادہو۔لوک جن شکتی پارٹی کے صدر اور رکن پارلیمنٹ چراغ پاسوان نے کہاہے کہ وزیراعلیٰ کو ایک خط لکھا گیا ہے کہ اگرکوئی کمی ہے تو اس کی اصلاح کی جائے تو اچھا ہوگا۔انہوں نے کہاہے کہ مزدوروں کارجسٹریشن ایک بہت بڑامسئلہ ہے۔بہار حکومت کی جانب سے دیئے گئے ہیلپ لائن نمبر پر بات چیت نہیں کی جارہی ہے۔ کارکنان کو آن لائن رجسٹریشن کرنے میں دشواری پیش آرہی ہے۔ اندراج کے عمل کو آسان بنایا جائے۔لاک ڈاؤن کے دوران مختلف ریاستوں میں پھنسے بہار مزدوروں کی پریشانی کے بارے میں چراغ پاسوان نے کہاہے کہ مزدوروں کی جگہ جگہ تصاویرآرہی ہیں۔مزدوروں کی تعداد بھی بڑھ رہی ہے۔ اسی لیے میں نے بہارکے وزیراعلیٰ نتیش کمار سے یوپی کی طرح مزدور لانے کی درخواست کی ہے۔انہوں نے کہاہے کہ پہلے پالیسی طلب کی گئی تھی ، لیکن اب مرکزی حکومت نے پالیسی بنائی ہے۔ کم از کم پھنسے مزدوروں کو شاہراہ سے لایا جائے۔