مزدوروں کے مسائل کوغلط طریقے سے کنٹرول کیاگیا

پالیسی کمیشن نے تارکین وطن محنت کشوں کی بدحالی پرسرکارپرسوال اٹھائے
نئی دہلی:پالیسی کمیشن کے سی ای او امیتابھ کانت نے کہاہے کہ ملک میں کوروناوائرس کی وجہ سے لگائے گئے لاک ڈاؤن کے دوران مرکز اور ریاستی حکومتیں تارکین وطن محنت کشوں کاخیال رکھنے کے لیے بہت کچھ کر سکتی تھیں۔انھوں نے کہاہے کہ لاک ڈاؤن کی وجہ سے وائرس کو پھیلنے سے روکنے میں ہم کافی حد تک کامیاب ہوئے ہیں لیکن مہاجر کارکنوں کے بحران کو خراب طریقے سے کنٹرول کیاگیا۔انھوں نے کہاہے کہ یہ سمجھنا بے حد ضروری ہے کہ تارکین وطن کے مسئلے کافی برسوں سے چیلنج بنے ہوئے ہیں۔ہم نے ان کے لیے قانون بنائے ہیں۔ریاستی حکومتوں کی ذمہ داری تھی کہ وہ یہ یقینی بناتیں کہ ہر مزدور کا خیال رکھاجائے۔بھارت جیسے بڑے ملک میں مرکزی حکومت سے متعلق حکومت کا کردار محدودہوتاہے۔یہ ایک چیلنج تھا، جومجھے لگتاہے کہ ہم اس معاملے میں لوکل، ضلع کی سطح اور ریاست سطح تک مزدوروں کے لیے بہت بہت بہتر کرسکتے تھے۔