مظاہر علوم سہارنپور میں بھی تعلیمی نظام کی شروعات

دیوبند:(سمیر چودھری)عالمی وباء کورونا مہاماری کے سبب گزشتہ تقریباً ایک سال متاثر تعلیمی نظام کو پٹری پر لانے کے لیے حکومت کے ساتھ ساتھ تعلیمی اداروں کے ذمہ داران بھی کوشاں ہیں، اسی کے تحت دارلعلوم دیوبند ک بعد اب ممتاز دینی درسگاہ جامعہ مظاہر علوم سہارنپور نے بھی اعلا ن جاری کرکے عربی اول تا چہارم تک کے طلبہ کو 24؍ فروری تک مدرسہ میں حاضر ہونے کی ہدایت دی ہے، ساتھ طلبہ کو تمام ضروری اور احتیاطی اقدامات کرنے اور والدین کی تحریر ی اجازت ساتھ لانے کی نصیحت کی ہے۔ جامعہ مظاہر علوم سہارنپور کے ناظم اعلیٰ مولانا محمد عاقل کی جانب سے جاری اعلان میں کہاگیا ہے کہ مرکزی وزارت داخلہ اور صوبائی حکومت کی جانب سے تعلیم کے متعلق آئی تازہ ہدایات کے بعد ادارہ کے اساتذہ نے مشورہ کرکے ایک مرتبہ پھر تعلیمی نظام کو شروع کرنے کا فیصلہ کیاہے۔ اعلان کے مطابق یوپی حکومت کی جانب سے تعلیمی نظام شروع کرنے کے متعلق آئی تازہ ہدایات کے بعد ادارہ کی جانب سے چہارم تک کے طلبہ کو ادارہ میں حاضر ہونے کی ہدایت دی گئی ہے اور کہاگیاہے کہ اول عربی تا عربی چہارم تک کے طلبہ حسب سہولت 24؍ فروری تک مدرسہ پہنچ جائیں،یہ تعلیمی نظام 20 ؍ شعبان تک چلے گا اس کے بعد تمام طلبۂ قدیم حسب معمول مدرسہ سے واپس جائیں گے۔ کہاگیاہے کہ تمام طلبہ اپنا آدھار کارڈ اور اپنے والدین و سرپرستوں سے تحریری اجازت نامہ ضرور لیکر آئیں،مدرسہ آنے والے تمام طلبہ کے لیے محکمہ صحت کی گائیڈ لائن کی پابندی لازمی ہوگی،طلبہ دورن سفر بھی حکومتی ہدایات کی پابندی کریں،عربی پنجم تا دورہ حدیث تک کے طلبہ ماہ شوال میں بھی مدرسہ آنے سے قبل مدرسہ انتظامیہ سے پوری صورت حال معمول کرلیں۔ اس سلسلہ میں جامعہ مظاہر علوم سہارنپور کے سکریٹری مولاناسید شاہد الحسنی نے بتایاکہ حکومت کی تازہ ہدایت کے بعد ادارہ میں دوبارہ تعلیمی نظام شروع کیاجارہاہے، ادارہ طلبہ کی صحت کے تئیں نہایت حساس اور سنجیدہ ہے اس لیے ادارہ میں تمام احتیاطی اقدام کئے جارہے ہیں ،طلبہ کو والدین کی تحریری اجازت لانے اور محکمہ صحت کی گائیڈ لائن کے مطابق فیس ماسک،سوشل ڈسٹینسنگ اور سیناٹائزر وغیرہ کے استعمال کی ہدایت دی گئی ہے۔