مولانا ارشد مدنی کو امیر الہند بنائے جانے کاخیر مقدم

جالنہ: جمعیت علماء مرہٹواڑہ مولانا سید ارشد مدنی کو امیر الھند بنائے جانے پر اس اقدام کو "حق بحق دار رسید” سے تعبیر کرتی ہے اور اس عمل کو ایک اہم ضرورت کی تکمیل قرار دیتی ہے۔ یہ بات مفتی مرزا کلیم بیگ ندوی صدر جمعیت علماء ارشد مدنی مرہٹواڑہ نے کہی۔ انھوں نے مزید کہا کہ امیر الہند رابع حضرت مولانا قاری محمد عثمان صاحب منصورپوری رحمہ اللہ کے انتقال کے بعد امارت شرعیہ ہند کی سرگرمیوں کو جاری رکھنے کےلیے اس بات کی سخت ضرورت تھی کہ جلد از جلد نئے امیر کا انتخاب کیا جائے۔ اسی کے پیش نظر مؤرخہ 03؍ جولائی 2021ء مطابق ۲۲؍ ذی القعدہ ۲۴۴۱ھ بروز سنیچر کو جمعیۃ علماء ہند کے صدر، جانشین شیخ الاسلام حضرت اقدس مولانا سید ارشد مدنی صاحب دامت برکاتہم العالیہ کو ”امیر الہند خامس“منتخب کرلیا گیاجو خوش آیند ہے۔
مولانا سید نصراللہ حسینی سہیل ندوی نائب صدر جمعیت علماء مرہٹواڑہ نے قائد محترم کے کارہائے نمایاں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ مولانا ارشد مدنی نے بالخصوص”جمعیۃ علماء ہند“ کے پلیٹ فارم سے اب تک ملک و ملت اور اسلامی تشخص کی سربلندی اور حفاظت کےلیے جو گرانقدر خدمات انجام دی ہیں وہ تاریخ کا روشن باب ہے۔ آپ نے اکابر کی روایات کو زندہ رکھتے ہوئے مسلمانوں کے خلاف اٹھنے والے طوفان بلاخیز کا ہر محاذ پر جمعیۃ علماء ہند کے پلیٹ فارم سے ڈٹ کر مقابلہ کیا اور ارباب اقتدار کو چیلنج کرتے ہوئے جس فراست و جرأت کا مظاہرہ کیا ہے اس نے فرزندان ملت کو عزت و وقار کے ساتھ جینے کا حوصلہ دیا ہے۔
مولانا عیسیٰ خان کاشفی خازن جمعیت علماء مرہٹواڑہ نے کہا کہ مولانا ارشد مدنی نے مسلمانوں کی اس نمائندہ و تاریخ ساز انقلابی تنظیم کی مسند صدارت پر فائز ہونے کے بعد سیاسی گلیاروں میں بیٹھے اقتدار کے دلالوں سے قربت یا ارباب اقتدار کی کاسہ لیسی جیسے ناپسندیدہ اور غیر مہذب طریقہ پر لات مار کر ایک نڈر بے خوف مجاہد حق کا حقیقی کردار ادا کرتے ہوئے مظلوم و ستم رسیدہ ملت کے مستحق افراد کے زخم خوردہ قلوب پر مرہم رکھنے کے فریضہ کو نہ صرف ادا کیا بلکہ یہ ثابت کردیا کہ آپ موجودہ فتنہ انگیزی کے دور میں اپنے اکابرین کے تاریخ ساز کردار کے حقیقی وارث اور امین ہیں۔ جمعیت علماء ارشد مدنی مرہٹواڑہ کے دیگر عہدے داران و ارکان عاملہ نے بھی مولانا سید ارشد مدنی کو امیر الھند بنائے جانے کا خیرمقدم کیا ہے اور اسے ملت اسلامیہ کےلیے  نیک فال سے تعبیر کیا ہے۔