معروف صحافی و فکشن نگار مسعود اشعر کا انتقال

لاہور : اردو کے ممتاز فکشن نگار، صحافی اور کالم نگار مسعود اشعر انتقال کرگئے۔انا اللہ وانا الیہ راجعون۔ ان کے داماد حسان نے اردو کے نامور لکھاری کی ۹۰برس کی عمر میں انتقال کی خبر کی تصدیق کی ہے۔مسعود اشعر کی نماز جنازہ کل صبح دس بجے بی بلاک ڈی ایچ اے لاہور میں ادا کی جائے گی۔مسعود اشعر کا اصل نام مسعود احمد خان ہے اور وہ ۱۰؍فروری ۱۹۳۰کو رام پور ہندوستان میں پیدا ہوئے تھے۔ قیام پاکستان کے بعد لاہور اور ملتا ن میں قیام پذیر رہے اور روزنامہ احسان، زمیندار، آثار، روزنامہ جنگ، ایکسپریس میڈیا اور امروز سے وابستہ رہے۔ افسانوں کے مجموعے آنکھوں پر دونوں ہاتھ، سارے افسانے اور اپنا گھرکے نام سے شائع ہوچکے ہیں۔ یونگ ہاکم کی کتاب کا ترجمہ انھوں نے "زندگی سے نجات "کے نام سے کیا تھاـ حکومت پاکستان نے انہیں ۱۴؍اگست ۲۰۰۹ء کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی اور ۲۰۱۵ میں ستارہ امتیازسے بھی نوازا تھا۔