مرکزی وزارت میں توسیع امروز فردا میں،جے ڈی یو کوٹہ سے وزارت کے بارے میں پارٹی کے قومی صدر فیصلہ کریں گے:نتیش

پٹنہ:نریندر مودی وزارت کی توسیع دو روز کے اندر ہونی ہے اس کےلیے سیاسی سرگرمیاں تیز ہوگئی ہیں۔ این ڈی اے کی اہم حلیف جے ڈی یو کوٹہ سے اس بار وزارت میں چار لوگوں کی شمولیت ہوسکتی ہے۔ ان میں اہم نام مونگیر سے رکن پارلیامنٹ راجیو رنجن عرف للن سنگھ ، آر سی پی سنگھ ، سنتوش کشواہا کے علاوہ اور ایک وزارت میں شامل ہوسکتے ہیں۔ لیکن ریاست کے وزیراعلی نتیش کمار نے آج اخباری نمائندوں سے گفتگو کے دوران مرکزی وزارت میں جے ڈی یو کوٹہ سے شامل ہونے والے وزراء کے بارے میں صاف طور پر کہاہے کہ پارٹی کے قومی صدر آر سی پی سنگھ اس موضوع پر وزیراعظم سے اور بی جے پی کے اہم لیڈران سے باتیں کررہے ہیں۔ وزارت میں شمولیت کا فیصلہ وزیراعظم کو کرنا ہے۔وزیراعلیٰ نتیش کمار جنتا دل یونائیٹڈکا ہر فیصلہ لے رہے ہیں ، لیکن مرکزی کابینہ میں توسیع کے بارے میں آج بیان دے کر لوگوں کو حیرت زدہ کردیا ہے۔جس کے سبب ان کی پارٹی میں ہلچل مچ گئی ہے۔ وزیراعلیٰ سیلاب زدہ علاقوںکے فضائی معائنہ کے بعد واپس پٹنہ آئے توانہوں نے کہا کہ مجھے نہیں معلوم کہ پارٹی سے کتنے وزیر بنائے جائیں گے۔ اب تمام فیصلے جے ڈی یو کے قومی صدر آر سی پی سنگھ لیتے ہیں۔مرکزی کابینہ میں کون شامل ہوگا ، کتنے لوگ شامل ہوں گے ، یہ سارے فیصلے آر سی پی سنگھ ہی لیں گے۔ وزیر اعظم نریندر مودی جو بھی فیصلہ لیں گے ، بہتر ہوگا۔سیاسی مبصرین نتیش کے اس بیان کو دو طرفہ تیر سمجھ رہے ہیں۔ پہلا یہ کہ اگر آر سی پی کامیاب ہوئے تو بھی اس کا سہرا نتیش کو ہی جائے گا ، لیکن اگر چیزیں کام نہیں کرتی ہیں ، تو آر سی پی کے معاملات میں کچھ کمی ہوگی۔دوسری بات آر سی پی کے خود وزیر بننے کی باتیں ہو رہی ہیں۔ ایسی صورتحال میں ، اگر چیزیں کام نہیں کرتی ہیں ، تو آر سی پی کے پاس ناراض ہونے کا کوئی عذر نہیں ہوگا ، کیوں کہ نتیش ہی ہر چیز کا فیصلہ کرنے کا اختیار رکھتا ہے۔قابل ذکر ہے کہ جے ڈی یو کے قومی صدر آر سی پی سنگھ آج دہلی پہنچ کر بی جے پی کے اعلیٰ رہنمائوں سے آخری مرحلے کے بارے میں بات کررہے ہیں۔آج نتیش کمار سیلاب سے متاثرہ علاقوں کا فضائی سروے کرنے کے بعد واپس آئے تو انہوں نے بتایاہے کہ انہوں نے اس تنظیم کی ذمہ داری ترک کردی ہے ، اب وہ حکومت چلانے پر پوری توجہ مرکوز کررہے ہیں۔