مرکزنے کیجریوال حکومت کی ’راشن کی ڈور اسٹیپ ڈلیوری ‘اسکیم پر لگائی پابندی

نئی دہلی:دہلی حکومت کی ایک اور اسکیم پر مرکزی حکومت کے ساتھ تنازعہ کھڑ ا ہورہا ہے۔ دراصل مرکزی حکومت نے دہلی حکومت کی اسکیم ’راشن کی ڈور اسٹیپ ڈلیوری ‘پر پابندی عائد کردی ہے۔ ’راشن کی ڈور اسٹیپ ڈلیوری اسکیم 25 مارچ سے دہلی میں شروع ہونی تھی۔ دہلی حکومت یہ سکیم ’مکھیہ متری گھر گھر راشن یوجنا’ ‘کے نام سے شروع کرنے جارہی تھی ، لیکن مرکز نے اس اسکیم پر اعتراض کیا ہے۔مرکزی حکومت نے دہلی حکومت کے فوڈ سپلائی سکریٹری کو ایک خط لکھ کر کہا ہے کہ اس اسکیم کو شروع نہیں کیا جانا چاہیے۔ مرکز نے اس کے پیچھے فوڈ سیکورٹی ایکٹ کا حوالہ دیا ہے۔ مرکزی حکومت کے مطابق فوڈ سیکورٹی ایکٹ کے تحت مرکزی حکومت راشن دیتی ہے ، لہٰذا دہلی حکومت کو اس اسکیم کو تبدیل نہیں کرنا چاہیے۔واضح رہے کہ دہلی کی کیجریوال حکومت نے بھی اس اسکیم کے لیے ایک ٹینڈر دیا تھا اور اسے 25 مارچ سے شروع کیا جانا تھا۔اس سے قبل کیجریوال حکومت نے متعدد سرکاری اسکیموں سے فائدہ اٹھانے کے لئے ڈور اسٹیپ ڈلیوری کی سہولت شروع کی تھی۔ یہ سہولت گذشتہ سال کوڈ کے درمیان متعارف کروائی گئی تھی ، جس کے تحت دہلی والے 50 روپئے معمول فیس کے عوض میںگھر پر ڈرائیونگ لائسنس یا نکاح نامہ جیسے دستاویزات وصول کرسکتے تھے۔ اس اسکیم کے بعد حکومت نے ڈور اسٹیپ ڈلیوری شروع کرنے کا منصوبہ بنایا تھا۔