مہاراشٹر میں مال گاڑی کی زد میں آنے سے 14 مہاجر مزدوروں کی موت

اورنگ آباد:مہاراشٹر کے اورنگ آباد ضلع میں ریل کی پٹریوں پر سو رہے 14 مہاجر مزدوروں کی مال گاڑی کی زد میں آنے سے موت ہو گئی۔پولیس کے ایک افسر نے بتایا کہ کرماڈ پولیس تھانے کے تحت آنے والے علاقے میں صبح سوا پانچ بجے ہوئے اس حادثے میں دو دیگر مزدور زخمی ہو گئے۔کرماڈ پولیس تھانے کے ایک اہلکار نے بتایا کہ وسطی مہاراشٹر کے جالنہ سے بھساول کی جانب پیدل جا رہے مزدور اپنے آبائی ریاست مدھیہ پردیش واپس آ رہے تھے۔انہوں نے بتایا کہ وہ ریل کی پٹریوں کے کنارے چل رہے تھے اور تھکاوٹ کی وجہ سے پٹریوں پر ہی سو گئے تھے۔کرماڈ سے تقریبا 40 کلومیٹر دور جالنہ سے آنے والے مال گاڑی پٹریوں پر سو رہے ان مزدوروں پر چڑھ گئی۔پولیس افسر سنتوش کھیت ملاس نے بتایاکہ جالنہ میں ایک اسٹیل فیکٹری میں کام کرنے والے مزدور گذشتہ رات پیدل ہی اپنے آبائی ریاست کی جانب نکل پڑے تھے۔وہ کرماڈ تک آئے اور تھک کر پٹریوں پر سو گئے۔انہوں نے بتایا کہ اس حادثے میں 14 مزدوروںکی موت ہو گئی جبکہ دو دیگر زخمی ہو گئے۔اس گروپ کے ساتھ چل رہے تین مزدور زندہ بچ گئے کیونکہ وہ ریل کی پٹریوں سے کچھ فاصلے پر سو رہے تھے۔انہوں نے بتایا کہ زخمیوں کا علاج چل رہا ہے۔کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لئے لگائے گئے لاک ڈاؤن کے سبب یہ مہاجر مزدور بے روزگار ہو گئے تھے اور اپنے گھر جانا چاہتے تھے۔وہ پولیس سے بچنے کے لئے ریل کی پٹریوں کے کنارے پیدل چل رہے تھے۔حادثے کی ایک ویڈیو کلپ میں پٹریوں پر مزدوروں کی لاشیں پڑی دکھائی دے رہی ہیں اور لاشوں کے پاس ان کا تھوڑا بہت سامان پڑا دکھائی دے رہا ہے۔وزیر اعظم نریندر مودی نے اس واقعہ پر جمعہ کو افسوس ظاہر کیا۔انہوں نے کہا کہ ہر ممکن مدد مہیا کرائی جا رہی ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ مہاراشٹر کے اورنگ آباد میں ریل حادثے میں لوگوں کے مارے جانے سے بہت دکھی ہوں۔ریلوے کے وزیر پیوش گوئل سے بات کی ہے اور وہ صورتحال پر قریبی نظر رکھ رہے ہیں۔مہاراشٹر اور مدھیہ پردیش حکومت نے مرنے والوں کے خاندانوں کو مالی مدد دینے کا اعلان کیا ہے۔