مغربی بنگال میں 30 مئی تک لاک ڈاؤن ،سخت پابندیاں نافذ

 

کولکاتہ:الیکشن کے بعدبنگال میں کورونامیں تیزی سے اضافہ ہواہے۔انتخابی نتائج کے بعداب پابندیاں لگائی جارہی ہیں۔اس وقت الیکشن کمیشن کی طرف سے سخت روک نہیں لگائی گئی۔چنئی عدالت نے بھی الیکشن کمیشن کوذمے داربتایاہے ۔ملک کے دیگرہائی کورٹ نے حکومت کی غیرذمے داری پرسوال اٹھائے ہیں۔ کورونا وبا سے نمٹنے کے لیے مغربی بنگال حکومت نے 16 سے 30 مئی تک مکمل لاک ڈاؤن کا اعلان کیا ہے۔ ٹیکسیوں ، بسوں ، میٹرو ٹرینوں کو 15 دن تک مکمل لاک ڈاؤن کے دوران چلانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ تمام نجی اور سرکاری دفاتر، اسکول کالج ، سنیما ہال ، شاپنگ مالز ، جیمز ، مارکیٹ کمپلیکس ، ریستوراں بند رہیں گی۔پورے لاک ڈاؤن کے دوران ضروری خدمات کو استثنیٰ حاصل ہے۔ سبزی منڈی ، پھل ، بجلی ، دودھ ، وغیرہ کی دوکانیں صبح 7 سے 10 بجے تک کھلی ر ہیں گی۔میٹھائی کی دکانیں صبح 10 بجے سے شام 5 بجے تک کھلی رہیں گی۔دواکی دکانیں باقاعدگی سے کھولی جائیں گی۔ لوکل ٹرینیں ، میٹرو ریلوے ،بس خدمات بند رہیں گی۔ نجی گاڑیوں اورٹیکسیوں کو صرف مریضوں کے سفر کی اجازت ہوگی۔ہر قسم کی سماجی ، تعلیمی ، سیاسی ، مذہبی تقاریب پر پابندی ہوگی۔ فیکٹریاں بھی بند رہیں گی۔ ملوں میں 30 فیصد مزدور کام کریں گے۔ شادی کی تقاریب میں 50 افراد اور شمشان گڑھ میں 20 افراد کی اجازت ہوگی۔