لنچنگ کے مقتول محمد انور اور صنوبر خاتون کے اہل خانہ کو امارت شرعیہ نےدیا پچاس پچاس ہزار کا چیک

 

سمستی پور (پریس ریلیز): امارت شرعیہ بہار اڈیشہ و جھار کھنڈ کے نائب امیر شریعت مولانا محمد شمشاد رحمانی قاسمی کی ہدایت پر قائم مقام ناظم جناب مولانا محمد شبلی القاسمی صاحب نے آ دھار پور ضلع سمستی پور میں ۲۱؍ جون کو پیش آئے سانحہ کی ایک ۹؍ رکنی وفد بھیج کر جائزہ کرایا ۔ وفد کی جائزہ رپورٹ پیش ہونے کے بعد نائب امیر شریعت صاحب نے لنچنگ کے مقتول محمد انور کی بیوہ و بچوں اور صنوبر خاتون کی بچیوں کے لئے پچاس پچاس ہزار روپے کی مالی مدد کی منظوری دی۔ چنانچہ آج مورخہ ۱۶؍ جولائی جمعہ کو نائب ناظم امارت شرعیہ مفتی محمد سہراب ندوی کی قیادت میں ضلع مظفر پور و سمستی پور کی اہم شخصیات کے ایک وفد نے آ دھار پور وبھرو کھرا پہنچ کر محمد انور کی بیوہ اور صنوبرخاتون کی بچیوں کو پچاس پچاس ہزار کا چیک حوالہ کیا۔ انور کی بیوہ کا چیک انور کے خسر کے توسط سے دیا گیا جبکہ صنوبر خاتون کی بڑی بچی نصرت پروین نے خود چیک وصول کیا۔ اس موقع پر نائب ناظم مفتی محمد

سہراب ندوی نے اظہار خیال کرتے ہوئے یہاں پیش آ ئے سانحہ پر گہرے غم کا اظہار کیا اورکہا کہ اس وقت سماج کو سب سے زیادہ ضرورت محبت اور بھائی چارگی کی ہے۔ نفرت اور عداوت سے سماج کا بھلا نہیں ہو سکتا ۔ انہوں نے ہر مذہب اور طبقہ کے لوگوں سے اپیل کی کہ ہر موقع پر تحمل سے کام لیں اور بھائی چارگی کے ماحول کو ہر گز ہر گز بگڑنے نہ دیں۔ انہوں نے متاثرین کو صبر کرنے کے ساتھ نماز کی پابندی اور اللہ کے طرف رجوع رکھنے کی تلقین کی۔ امارت شرعیہ جس کی طرف سے یہ مالی مدد پیش کی گئی ہے اس کا تعارف کراتے ہوئے نائب ناظم صاحب نے کہا کہ یہ ایک دینی ملی اور فلاحی تنظیم ہے۔ جس کا ایک اہم شعبہ دکھ کی گھڑی میں انسانیت کی مدد ہے۔ آج کی

یہ مالی مدد اسی خدمت کا ایک حصہ ہے۔ موصوف نے لنچنگ کےاس سانحہ کے سلسلہ میں حکومت کو بھی متوجہ کرتے ہوئے کہا کہ ہجومی تشدد ایک بدنما داغ ہے جس پرحکومت کو فوری توجہ دیتے ہوئے ایسا قانون بنانا چاہئے جس سے اس طرح کی غیر انسانی حرکت پر پابندی لگ سکے۔ انہوں نے کہا کہ اس سانحہ میں جو لوگ بھی مجرم ہیں ان کو ہر حال میں سخت سے سخت سزا ملنی چاہئے اور جلد از جلد قانون کو اپنا کام کرنا چاہئے۔ لنچنگ کے ذریعے قتل کا جومعاوضہ حکومت کی جانب سے طے ہے وہ مقتول کے اہل خانہ کو فوری طور پر دیا جائے۔ صنوبر خاتون جو ایک سرکاری معلمہ تھیں ان کی جگہ پر ان کی بچی کو جو سند یافتہ ہے انہیں سرکاری ملازمت دی جائے اور خوف و ہراس کی وجہ سے جو لوگ اپنے گھروں کو گھر کو چھوڑچکے ہیں ان کی واپسی اور ان کے تحفظ کو یقینی بنائے۔

آج کے اس وفدمیں تنظیم امارت شرعیہ مظفر پور کے ضلع صدرجناب محمد شعیب صاحب، قاضی شریعت سمستی پور مولانا صدام حسین قاسمی صاحب، نائب صدر مظفر پور جناب ماسٹر شاہ عالم صاحب، جوائنٹ سکریٹری حافظ صبغت اللہ رحمانی صاحب، محمد اظیار صاحب، انجینئر محمد وسیم شعیب صاحب، مدرسہ اسلامیہ شاہ پور بگھونی کے استاد قاری محمد انوار قاسمی صاحب کے علاوہ مقامی ذمہ داران میں راشٹریہ جنتا دل کے ریاستی جنرل سکریٹری فیض رحمن فیض صاحب، ابو لیث آ زاد صاحب ۔ مظہر حسین صاحب، قربان صاحب وغیرہ شامل تھے۔ مقامی حضرات نے امارت شرعیہ کی طرف سے متاثرین کی بروقت مدد پر امارت شرعیہ کے ذمہ داروں کا بڑے الفاظ میں شکریہ ادا کیا۔ اور کہا یہ امارت شرعیہ کا اقدام دوسروں کےلئے اہم سبق ہے۔