کسی بھی مریض کو واپس نہیں کیاجائے گا، حکومت اخراجات برداشت کرے گی، یوگی کی طفل تسلی

لکھنؤ:کورناسے نمٹنے میں ناکام ریاست اتر پردیش کے وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے اتوار کے روز ایک اہم حکم دیا جس سے کورونامتاثرین کو راحت ملی ہے۔ انہوں نے تمام اسپتالوں کو سخت ہدایات دی ہیں کہ کوئی بھی اسپتال کسی بھی مریض کو واپس نہیں کرے گا۔ اگر سرکاری اسپتال میں بستر نہیں ہیں تومریض کو نجی اسپتال میں داخل کیا جائے گا اور اس کے علاج کی پوری قیمت ریاستی حکومت برداشت کرے گی۔کورونا مینجمنٹ کے لیے قائم ٹیم 11 کو ہدایت دیتے ہوئے سی ایم یوگی نے کہاہے کہ بستر کی کمی کی وجہ سے مریض کو علاج سے انکار نہیں کیا جاسکتا۔ ایسے واقعات پر ڈسٹرکٹ آفیسر اور چیف میڈیکل آفیسر کا احتساب طے کیا جائے گا۔ انہوں نے کہاہے کہ پچھلے تین چار دن کے اندر ریاست کے مختلف اضلاع میں ساڑھے 14 ہزار سے زیادہ بستروں میں اضافہ کیا گیا ہے۔ سی ایم یوگی نے یہ بھی حکم دیاہے کہ کسی بھی متاثرہ کورونا کی آخری رسومات کے لیے رقم نہیں لی جانی چاہیے۔سی ایم یوگی نے کہا ہے کہ ریاست کے ایسے تمام اسپتالوں میں جہاں کورونا مریضوں کا علاج کیا جارہا ہے ، اسپتال میں خالی بستروں کے بارے میں معلومات دن میں دو بار عام کی جائیں۔ یہ معلومات ضلع کے انٹیگریٹڈ کمانڈ اور کنٹرول سنٹر کے پورٹل پربھی اپ لوڈکی جانی چاہئیں۔ انھو ںنے کہاہے کہ کوویڈ متاثرہ مریضوں کو گھر کی تنہائی میں رہائش پذیر میڈیکل کٹس بروقت مہیا کی جائیں۔میڈیکل کٹ میں کم از کم 7 دن تک دوائیں ہونی چاہئیں۔