کسانوں نے مئی میں پارلیمنٹ مارچ کااعلان کیا

نئی دہلی:مرکزی حکومت کے ذریعہ نافذ کردہ تینوں زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کرنے والے کسانوں نے اپنے احتجاج میں مزید توسیع کرنے کافیصلہ کیا ہے۔ کسان مئی میں زرعی قوانین کے خلاف پارلیمنٹ میں مارچ کریں گے۔ مشترکہ کسان مورچہ کے بیان میں یہ معلومات دی گئی ہیں۔راکیش ٹکیت نے پہلے کہاہے کہ وہ پارلیمنٹ کے پاس فصل بیچیں گے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ متحدہ کسان مورچہ کی جنرل اسمبلی میں یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ ایف سی آئی بچاؤ 5 اپریل کو منایا جائے گا اور اس دن ملک بھر میں ایف سی آئی کے دفاتر کا گھیراؤ کیا جائے گا۔ 13 اپریل کو بیساکھی کا تہوار دہلی کی سرحدوں پر منایا جائے گا۔ دستور بچانے کا دن ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر کی یوم پیدائش 14 اپریل کو منایا جائے گا ، اسی طرح یکم مئی کو دہلی کی سرحدوں پر یوم مزدور منایا جائے گا۔ اس دن تمام پروگرام مزدور کسان اتحادکے لیے وقف ہوں گے۔ تحریک کو مزید آگے بڑھاتے ہوئے مئی کے پہلے پندرہ دنوں میں پارلیمنٹ کا سفر کیا جائے گا ۔اس میں خواتین ، دلت آدیواسی بہوجن ، بے روزگار نوجوان اور معاشرے کے ہر طبقہ کو شامل کیا جائے گا۔