کسان ماؤنواز یاخالصتانی ہیں توحکومت کس سے مذاکرات کررہی ہے؟عام آدمی پارٹی کاسوال

نئی دہلی:دہلی کے وزیراعلیٰ اروندکجریوال کی پارٹی عام آدمی پارٹی (آپ) نے پیر کے روز کسانوں کے ایک روزہ بھوک ہڑتال کی تائیدکی ہے۔ پیرکے روز عام آدمی پارٹی کے لیڈران اورکارکنان بھی ایک دن کی بھوک ہڑتال کریں گے۔ آپ کے دہلی کے کنوینر گوپال رائے نے پریس کانفرنس میں مرکزی حکومت اور بی جے پی کو نشانہ بنایا۔گوپال رائے نے کہاہے کہ اگر یہ کسان ماؤ نواز ، دہشت گرد ہیں توپھر حکومت جن کے ساتھ وگیان بھون میں بات چیت کر رہی تھی ،وہ کون تھے ۔ انہوں نے کہاہے کہ 11 کسان اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں ، لیکن مرکزی حکومت ، بی جے پی قائدین ا وروزرا تکبر میں ہیں۔ حکومت کا خیال ہے کہ وہ اس تحریک کو توڑ دیں گے ، اس کو بدنام کریں گے اور کسان گھر چلے جائیں گے ، لیکن حکومت غلط فہمی میں ہے۔رائے نے کہا ہے کہ وزیر اعظم ، وزیر داخلہ ، وزیر زراعت تکبر ترک کردیں۔ کسانوں نے کل ایک دن کی بھوک ہڑتال کا اعلان کیا ہے ، ملک بھر میں آپ کے کارکنان ان کی حمایت میں کل بھوک ہڑتال کریں گے۔کل صبح 10 سے 5 تک آئی ٹی او پارٹی آفس میں دوپہر تک بھوک ہڑتال کی جائے گی۔ اے اے پی ہر قدم پر کسانوں کے ساتھ کھڑی ہے۔ پارٹی ایم ایل اے ، کارکنوں کی خدمت کا کام جاری رہے گا۔انہوں نے کہاہے کہ وزیر اعظم مودی کوکسانوں سے براہ راست بات کرناچاہیے،نہ کہ بنارس میں ، بلکہ ایف آئی سی سی آئی کے اجلاس میں صنعتکاروں سے بات چیت کرنی چاہیے۔ کسانوں کی طرف سے چھ دورکے مذاکرات ہوے ، وزراء نے وضاحت کی ، حکومت نے بھی پیش کش کی ، حکومت نے تسلیم کیاہے کہ زرعی بل میں خامیاں ہیں،جب خود مانتے ہیں کہ اس میں کمی ہے تو اسے واپس لینامرکزکی ذمہ داری ہے۔