کنڈل (Kindle ) بُک ریڈر: ایک تعارف ـ عبد المتین منیری

احباب نے کتابوں کے مطالعہ کے ایک مشہور آلے کنڈل kindle کے بارے میں دریافت کیا ہے۔ مناسب معلوم ہوتا ہے کہ اس سلسلے میں حاصل چند معلومات فراہم کی جائیں، ممکن ہے، اس سے مطالعہ کے فروغ کی تحریک میں کچھ مدد مل سکے۔
اس وقت اردو داں حلقہ عموما الکٹرونک کتابیں موبائل پر پڑھنے کا عادی ہے، اور اگر اللہ نے کسی کو سہولت دی تو پھر لیپ ٹوپ یا ٹیبلیٹ اور ای پیڈ پر بھی کتابیں پڑھی جاتی ہیں، لیکن ان میں سے کوئی بھی آلہ صحت مند مطالعہ کے لئے نہیں بنایا گیا ہے، لہذا اس کے نقصانات مختلف شکلوں پر صحت پر پڑھتے ہیں، کبھی اس کی تیز روشنی آنکھوں کو نقصان دیتی ہے، کبھی اس پر مطالعہ میں ارتکاز نہیں ہوپاتا، ان آلات پر مطالعہ عموما پانی کی لکیر ہوا کرتا ہے، مطالعہ کے لئے جس یکسوئی ، آرام اور قوت مشاہدہ کی ضرورت ہوتی ہے، ان میں یہ میسر نہیں ہوپاتیں،لہذا جو لوگ سنجیدہ مطالعہ کرنا چاہتے ہیں، وہ پی ڈی یف کا پرنٹ آوٹ لے کر ہی پڑھتے ہیں، انک کٹریج کے پرنٹروں نے اب کتابوں کی طباعت کو کافی سستا کردیا ہے۔مطبوعہ کتابوں سے بھی زیادہ۔
اردو داں حلقہ عموما مطالعہ کے سلسلے میں ترقی یافتہ قوموں سے بہت ہی پیچھے ہے، یورپین قومیں عموما خالی بیٹھنا نہیں پسند کرتیں،نہ صرف بس، ٹرام، ریل اور جہاز پر بلکہ حمام اور سمندر کنارے نہاتے ہوئے بھی ان کے ہاتھ میں کتاب دیکھی جاتی ہے۔ جدید ایجادات تو انہوں نے بنائیں، لیکن انہوں نے کتاب سے اپنا تعلق نہیں توڑا۔
چونکہ موبائل اور ٹیبلیٹ روزمرہ مطالعہ کے لئے نہیں ہیں، لہذا موبائل اور ٹیبلیٹ کی جگہ پر کتابوں کے مطالعہ کے لئے کئی دوسرے آلات ایجاد ہوئے ہیں، جن میں اس بات کا خیال رکھا گیا ہے کہ اس کا حجم ہلکا پھلکا ہو، گھنٹوں لیٹے بیٹھے ہاتھ میں رہے تو وزن محسوس نہ ہو، اس کا وزن کاغذ کی کتاب سے زیادہ نہ ہو۔ اس کی روشنائی کتاب کی روشنائی سے مطابقت رکھتی ہو، اس کی روشنی آنکھوں پر نہ پڑے، نہ انہیں تکلیف دے، ایک کلک سے مشکل الفاظ کے معنی فورا مل سکیں، اور منتخب عبارتوں کو ہائی لائٹ کرنے کی سہولت ہو،اس میں سینکڑوں کتابیں بہ یک وقت رکھی جاسکیں، اور یہ صرف مطالعہ کے لئے ہو۔ ان آلات میں سب سے مشہور امازون کمپنی کا کینڈل ہے۔ جو بنیادی طور پر مراجع کے مطالعہ کے لئے نہیں، بلکہ ہلکے پھلکے سریع مطالعہ کے لئے بنایا گای ہے۔
جس طرح نوٹ ،ورڈ اور پی ڈی یف فورمیٹ عبارت خوانی کے لئے ہے، اسی طرح کینڈل میں کتابوں کے مطالعہ کے لئے اے،ڈبلیو،زید azw3 سوفٹ ویر استعمال ہوتا ہے۔اردو عربی کی پی ڈی یف کتابیں بھی اس پر پڑھی جاسکتی ہیں۔ لیکن اس کے اپنے سوفٹ میں تیار شدہ کتابیں آنکھوں کو ٹھنڈک دیتی ہیں۔ اس کے مخصوص سوفٹ پر اردو کتابیں شاید ابھی دستیاب نہیں ہیں۔
عربی، انگریزی اور دوسری مغربی زبانوں کی کتابیں بے تحاشا اس پر دستیاب ہیں، اور زیادہ تر قیمتا ہیں۔ مفت بھی کتابیں ملتی ہیں۔
ہمارے پاس اس کا اوسیس ایڈیشن ہے جو حجم میں سب سے بڑا، یعنی پانچ انچ لمبا ہے، یہ کچھ مہنگا بھی ہے، اس کے مقابلے میں ایک انچ چھوٹے آلے کی قیمت بہت کم ہے۔
ہم نے اسے پی ڈی یف کتابیں پڑھنے کے لئے لوک ڈون کے آغاز میں گیارہ سو درھم میں خریدا تھا، ابتدا میں افسوس ہوا کیونکہ پی ڈی یف کتابوں کا حجم بہت چھوٹا نظر آرہا تھا، اور کتابیں پڑھی نہیں جارہی تھیں، پھر اللہ نے اس سے استفادے کی راہیں کھول دیں۔
در اصل بات یہ تھی کہ پی ڈی یف پر کتابیں عموما اے فور A4 سائز پر ہوتی ہیں، اور اس کے حروف کا حجم ۱۴ ہوتا ہے۔ اب اے ۵ کے چھوٹے حجم پر اے ۴ کا لمبا چوڑا صفحہ پڑھنے کی کوشش کی جائے گی، تو پھر صفحہ سکڑ کر چھوٹا ہوجائے گا، اور خود بخود حروف کا حجم چودہ سے سات پر آجائے گا، جسے پڑھنے کے لئے آنکھیں پھوڑنی پڑیں گی۔
کتابوں کو پڑھنے کے لائق بنانے کے لئے ، پہلے ہم نے کوشش کی کہ ورڈ پر دستیاب فائلوں کے حروف کو ۱۸ رکھ کر اے ۵ میں انہیں لاکر کینڈل کے لئے مخصوص فورمیٹ میں سوفٹ ویر کے ذریعہ تبدیل کیا جائے، لیکن اس میں سطریں بائیں سے دائیں ہوگئیں، پھر ہم نے ورڈ فائلوں کو لے کر انہیں اے ۵ میں تبدیل کیا، فونٹ ۱۸ رکھے، اور فاصلوں کے بغیر انہیں مسلسل رکھا، اور پھر انہیں پی ڈی یف میں کنورٹ کرکے کینڈل پر پڑھنا شروع کیا، تو اس میں بہت آرام ہوگیا۔
ہم لوگ عموما سست واقع ہوئے ہیں، طلب اور جستجو عموما مفقود ہے، یہ سب چیزیں ایسے مزاج کے لوگوں کے لئے نہیں ہیں، ہاں اگر کوئی کینڈل سے فائدہ اٹھانا چاہتا ہے تو اس کا طریقہ کوئی مشکل نہیں، اور اس پر ہمارا عمل ہے۔
ادب عالیہ لائبریری کی جو کتابیں علم وکتاب گروپ پر پوسٹ ہوتی ہیں، اس کی ورڈ فائلوں کو لیا جائے، انہیں اے ۵ میں کنورٹ کیا جائے، حاشیہ بالکل نہ چھوڑا جائے، نہ ہی پیرے گراف کے درمیان فاصلہ چھوڑا جائے، اس فائل کو پی ڈی یف میں تبدیل کرکے ، کینڈل پر پڑھا جائے۔
مکتبہ شاملہ کی جملہ کتابیں وورڈ پر کنورٹ کی جاسکتی ہیں، اس وقت شاملہ کی کتابوں کی تعداد تیس ہزار تک پہنچ چکی ہے۔ ان کتابوں کی جلدیں لاکھوں تک پہنچ جاتی ہیں۔ اوپر کے طریقہ سے انہیں کنورٹ کرکے استفادہ کیا جاسکتا ہے۔ جو لوگ بغیر مطالعہ کے نہیں رہ سکتے ان کے لئے یہ نعمت غیر مترقبہ ہے۔ ہاں پی ڈی یف پر جو کتابیں ہزاروں لاکھوں کی تعداد میں دستیاب ہیں، ان میں سے جو اے ۵ سائز میں ہیں، انکے حواشی کو کاٹ کر کینڈل سے استفادہ کیا جاسکتا ہے۔ امید کہ یہ مختصر تعارف آپ کے لئے مفید رہا ہوگا۔