کجریوال کب تک چھپے رہیں گے؟گوتم گمبھیرکاسوال

نئی دہلی:دہلی میں تین میونسپل کارپوریشنوں کو فنڈز کی فراہمی پر سیاسی تحریک میں اضافہ ہواہے۔ اس مطالبے پر نئی دہلی کے تینوں میئروزیراعلیٰ کیجریوال کے گھر کے باہر دھرنے پر بیٹھے ہیں۔اب بی جے پی کے بڑے رہنما اس دھرنے میں شامل ہو رہے ہیں۔ آج بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ گوتم گمبھیر،بی جے پی کے سابق صدر منوج تیواری اور موجودہ بی جے پی صدر آدیش گپتا دھرنا میں شامل ہوئے تھے۔ یہ تمام رہنما سی ایم کیجریوال کی رہائش گاہ کے باہر دھرنے پر بیٹھے ۔کیجریوال کے گھر پر دھرنے پر بیٹھے بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ گوتم گمبھیر نے سی ایم کیجریوال پر حملہ کیا ہے۔ انہوں نے ٹویٹ کیا کہ کب تک چھپیں گے دیوار میں ،کبھی تو باہرآئیں گے مفلرکی دیوارسے ۔ دھرنوں کے ماہر اروند کیجریوال اب دھرنوں سے خوفزدہ ہیں۔دہلی کے تینوں میئر7 دسمبرسے ہی سی ایم کیجریوال کے گھر کے باہر دھرنے پربیٹھے ہیں۔ یہ تینوں میئر دہلی کی حکومت سے دہلی کے تینوں میونسپل کارپوریشنوں کے لیے 13 ہزار کروڑروپیے جاری کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں۔ دہلی کی میونسپل کارپوریشنوں کا الزام ہے کہ کیجریوال حکومت کارپوریشنوں کو اپنا فنڈ نہیں دے رہی ہے۔ بی جے پی رہنماؤں کے مظاہرے کے پیش نظر دہلی پولیس نے سی ایم رہائش گاہ کے باہر سیکیورٹی سخت کردی ہے۔ یہاں بڑی تعداد میں پولیس دستے تعینات کردییے گئے ہیں۔ادھرعام آدمی پارٹی نے الزام لگایا ہے کہ کسی کو بھی سی ایم کیجریوال کے گھرجانے کی اجازت نہیں ہے۔ پارٹی کے ترجمان راگھو چڈھا نے بدھ کے روزکہا کہ کسی کو دہلی کے وزیراعلیٰ سے ملاقات کی اجازت نہیں دی جارہی ہے۔