کرناٹک :وزیراعلیٰ اورریاستی وزرا خودکوروناگائڈ لائنز کی دھجیاں اڑارہے ہیں

بنگلورو: کرناٹک اور خاص طور پر بنگلورو میں لاک ڈاؤن جیسے حالات ہیں لیکن اس کے باوجود وزیراعلیٰ سے لے کر ان کی کابینہ تک کے دیگر وزراء کھلے عام ماسک اور معاشرتی فاصلے کو نظرانداز کررہے ہیں۔ ان کی لاپرواہی کی وجہ سے عام لوگ بھی بے خوف ہو کر ریلی نکال رہے ہیں ، وہ بھی جب بنگلورو میں اس پر پابندی عائد ہے۔ کرناٹک میں روزانہ 10 ہزار کے قریب کوروناوائرس کے انفیکشن کے کیسزسامنے آنا شروع ہوگئے ہیں۔ ان میں سے 75 فیصد صرف بنگلورو سے ہیں۔ امبیڈکر جینتی پروگرام میں وزیراعلیٰ بی ایس یدیورپا اور ان کے کابینہ کے وزیر سماجی بہبود مسٹر رامالو نے ماسک نہیں ڈالا اور اسے معاشرتی دوری کی بھی پرواہ نہیں تھی۔ پابندی کے باوجود اس طرح کی ریلیاں کون روکے گا جب وزراء￿ اور عہدیدار خود قواعد کی خلاف ورزی کریں گے؟اسی طرح کوڈ پروٹوکول کو نظر انداز کرتے ہوئے چاردیگر وزرا پریس کانفرنس میں شریک ہوئے۔ اب ان کا چالان کون کاٹے گا؟ تاہم بنگلورو میں ، ایجنسیوں نے صرف 10 دن کے دوران معاشرتی دوری نہ دیکھنے اور ماسک نہ پہننے پر لگ بھگ 1 کروڑ روپے جرمانہ عائد کیا ہے۔وزیراعلیٰ بی ایس یدی یورپا اور ان کی کابینہ کے وزیر سماجی بہبود شری رامالو نے امبیڈکر جینتی پروگرام کے دوران ماسک نہیں پہنے۔ وہ معاشرتی دوری کی بھی پرواہ نہیں کرتے تھے۔