کپل سبل اے سی سے نکل کربنگال میں پارٹی کومضبوط کریں:ادھیررنجن چودھری

نئی دہلی:بہار اسمبلی انتخابات میں کانگریس کی مایوس کن کارکردگی پر پارٹی میں اختلاف کی آوازوں کے درمیان لوک سبھا میں کانگریس کے رہنما ادھیر رنجن چودھری نے بھی اپنانقطہ نظر پیش کیا ہے۔ ادھیر رنجن نے کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل پر حملہ کیا ہے جنھوں نے قیادت پرسوال اٹھائے تھے۔ ادھیر رنجن نے سبل کو بنگال میں الیکشن لڑنے کی دعوت دی اور کہا ہے کہ یہ درست نہیں ہے کہ اے سی چیمبر میں بیٹھ کر بات کریں ، انتخابات لڑیں اور رقم سے مددکریں۔ ایسے لیڈر پارٹی میں قانونی طور پر بھی مددکرسکتے ہیں۔ ادھیر رنجن نے انٹرویو دیتے ہوئے کہاہے کہ انتخابات کے بعد تنقید کرنا ہمارے جیسے قائدین کے لیے اچھانہیں ہے۔ کانگریس میں قدآور بزرگ قائدین کی کمی نہیں ہے۔ لیکن انتخابات کے اچھے نتائج برآمد ہوئے ۔ترجمان نے انتخابات کے بارے میں بات کی ہے۔ یہ لڑائی بہار میں جتنی بھی نشستوں پرہوئی تھی ، جیتی گئی تھی۔ لیکن ان سیٹوں پرتھوڑی بہت امید تھی۔کپل سبل کے تبصرے کے سوال پرادھیر رنجن نے کہاہے کہ اس کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہے کہ انہوں نے کس وقت کا انتخاب کیا۔ لیکن احتجاج کرنے کا ایک طریقہ ہے اور اس طرح کے بیانات ہمارے کارکن برداشت نہیں کرتے ہیں۔ بنگال انتخابات میں ہم کمزور ہیں ،ہم لڑ رہے ہیں۔ یہ بہت اچھا ہوگا اگر ایسے وقت میں ایسالیڈران مددکریں۔پارٹی کے پاس پیسہ نہیں ہے ،لیکن ایسے لوگ بڑے آدمی بن گئے۔ ادھیر رنجن مغربی بنگال میں کانگریس کے صدراورلوک سبھا میں کانگریس کے لیڈربھی ہیں۔