جولائی میں ہندوستان کو ملیں گے 4 رافیل ہوائی جہاز، انبالہ ائیر بیس پر ہوں گے تعینات

نئی دہلی:ایسے وقت میں جب چین اور پاکستان دونوں کے ساتھ سرحدوں پر کشیدگی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ہندوستانی فضائیہ کو جولائی میں بڑی طاقت ملے گی جب اس کے بیڑے میں انبالہ میں رافیل لڑاکا طیارے شامل ہونا شروع ہو جائیں گے۔اعلی سرکاری ذرائع نے بتایاکہ کورونا وائرس کی وجہ سے چند ہفتوں کی تاخیر ہوئی ہے، لیکن اب رافیل طیارے جولائی میں آنے شروع ہو جائیں گے۔یہ فضائی جنگی صلاحیتوں میں ملک کی طاقت کو بڑھانے میں ہماری مدد کریں گے۔ہوائی جہاز ہوا سے ہوا میں مار کرنے والے میٹیر میزائل میں سے ایک ہیں اور دشمن کے طیاروں کو 150 کلو میٹر سے زیادہ فاصلے پر ہی مار گرانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔چین اور پاکستان دونوں ہی اتنی فاصلے پر میزائل لانچ نہیں کر سکتے ہیں۔
فضائیہ کے سابق سربراہ بی ایس دھنوا نے کہا تھا کہ اگر رافیل ہندوستانی بیڑے میں شامل ہو جاتا ہے، تو پاکستان ہندوستانی علاقے کے قریب جارحانہ اندازمیں آنے کی ہمت تک نہیں کریں گے۔ہندوستان آنے والے طیاروں کے پہلی دستے میں تین ٹرینر اور ایک لڑاکا طیارے شامل ہوں گے۔رافیل اسکوائڈرن کے کمانڈنگ آفیسر انہیں اڑا کر لائیں گے۔ہندوستان نے 2016 میں وزیر اعظم نریندر مودی کی پہل پر 36 رافیل طیاروں کے لئے معاہدے پر دستخط کئے تھے۔وزیر اعظم جنوبی ایشیا کے آسمان میں ہندوستانی فضائیہ کی برتری کو برقرار رکھنا چاہتے تھے۔فی الحال، پاکستان اور چین دونوں ہی ملک کی امن اور سلامتی کی راہ میں رکاوٹ پیدا کر رہے ہیں،دونوں ہی محاذوں پر کشیدگی ہے۔