جو بائیڈن امریکہ کے46ویں صدر بننے کے قریب،ٹرمپ کو وہائٹ ہاؤس سے باہر نکالنے کے لیے پلان بی تیار

واشنگٹن:امریکہ کے صدارتی انتخابات کے نتائج پرپوری دنیا کی نگاہ ٹکی ہوئی ہے۔ بائیڈن جارجیا اور پنسلوانیا جیسی ریاستوں میں جیت کے ساتھ کرسیِ صدارت کے قریب پہنچ چکے ہیں،جبکہ ڈونلڈ ٹرمپ پہلے ہی اشارہ کر چکے ہیں کہ وہ شکست کو آسانی سے قبول نہیں کریں گے اور حکومت چھوڑنے میں بھی آناکانی کر سکتے ہیں۔ ایسی صورتحال میں انھیں وائٹ ہاؤس سے نکالنے کے لیے پلان بی پر بھی کام شروع کردیا گیا ہے۔ جو بائیڈن کی ٹیم نے جمعہ کے روز انتباہ دیا تھا کہ انتخابات میں ٹرمپ کی شکست کے بعد بھی اگر ٹرمپ نے صدرہاؤس چھوڑنے سے انکار کردیا تو سیکیورٹی اہلکار انہیں باہر نکال سکتے ہیں۔
ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار جو بائیڈن اکثریت حاصل کرتے نظر آرہے ہیں۔ جارجیا اور پنسلوانیا جیسی ریاستوں میں بھی ان کو برتری ملی ہے۔ اس کے ساتھ ہی ٹرمپ کا مسلسل دوسری بار امریکی صدر بننے کا خواب بکھرتا ہوا نظر آرہا ہے۔ تاہم انہوں نے واضح کیا ہے کہ وہ ہار ماننے کو تیار نہیں ہیں۔ وہ ووٹوں کی ہیرا پھیری کا الزام لگا رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اگر غیر قانونی ووٹوں کی گنتی نہ کی جاتی تو وہ آسانی سے الیکشن جیت جاتے۔
بائیڈن کمپین کے ترجمان اینڈریو بیٹس نے کہاہے "جیسا کہ ہم نے 19 جولائی کو کہا تھا ، امریکی عوام اس انتخاب کا فیصلہ کریں گے اور ریاستہائے متحدہ امریکہ کی حکومت وائٹ ہاؤس پر قبضہ کرنے والوں کو نکالنے کی پوری طرح اہل ہے۔” فاکس نیوز کے ساتھ ایک انٹرویو میں ٹرمپ نے ہارنے پر نتائج کو قبول کرنے اور اقتدار سےباہر ہونے کی صورت میں اقتدار کی منتقلی سے انکار کردیا تھا۔ اب بھی ہزاروں ووٹوں کی گنتی باقی ہے،ان میں سے بیشتر ڈیموکریٹک پارٹی کے زیر اثر علاقوں میں ہیں۔ بائیڈن نے پنسلوانیا میں 9000 ووٹوں کی برتری حاصل کی ہے۔
پینسلوانیا اور اس کے 20 الیکٹورل ووٹ 77 سالہ بائیڈن کو الیکٹورل کالج میں 270 ووٹوں کے جادوئی عدد کی طرف پہنچانے کے لیے کافی ہیں۔ بائیڈن کو جارجیا میں بھی برتری حاصل ہوئی ہے۔ تاہم یہاں دوبارہ گنتی کا اعلان کیا گیا ہے۔ جمعہ کو بائیڈن نے کوئی جواب نہیں دیا۔ تاہم جمعرات کو انہوں نے امید ظاہر کی تھی کہ انہیں فاتح قرار دیا جائے گا۔ واشنگٹن پوسٹ نے جمعہ کے روز بتایا کہ یو ایس سیکریٹ سروس نے بائیڈن کو فتح کے بہت قریب دیکھتے ہوے ان کی سیکیورٹی بڑھادی ہے۔

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*