جے ڈی یوکے ایم ایل اے کوعوام کاخوف،گاؤں جانے سے ڈرلگنے لگا

جہان آباد:جدیوکی مخالفت بڑی عوامی سطح پرہورہی ہے۔پارٹی اس سے خوف زدہ ہے۔کورنابحران،تارکین وطن مزدوروں کی پریشانی، سیلاب اوربدترطبی سہولیات پرپارٹی سے جواب نہیں بن پارہاہے۔ جہان آبادضلع کے کرتھا اسمبلی حلقہ کے جے ڈی یوایم ایل اے ستیادیو سنگھ کی ایک ویڈیو ان دنوں سوشل میڈیاپروائرل ہو رہی ہے جس میں وہ یادو کے گاؤں نہیں جانے کے علاوہ بھی بہت سی باتیں کہتے نظر آ رہے ہیں۔جے ڈی یو کے ایم ایل اے کا کہنا ہے کہ وہ یادو کے گاؤں جانے سے ڈرتے ہیں۔ انہیں خوف ہے کہ اگر وہ وہاں گئے تو لوگ ان کا گھیراؤکریں گے اور پیسے مانگنا شروع کردیں گے اور کار کو آگ لگادیں گے۔ لہٰذااگر کوئی مرجاتا بھی ہے تو وہ یادوکے گاؤں نہیں جاپائیں گے۔ ہم سوگ منانے بھی نہیں جاتے ہیں۔لیکن وہ حکام کوفون کرتے ہیں اور متاثرہ خاندان کے لیے رقم کاانتظام کرتے ہیں۔یہاں جب اے بی پی کے رپورٹر نے وائرل ویڈیوکیس میں ایم ایل اے ستیادیو سنگھ سے جواب طلب کیا تو انہوں نے کہا ہے کہ بھائی چھوڑو ، یہ سب جعلی ہے۔نیزیہ بھی کہاہے کہ ہم ایک چھوٹے آدمی ہیں اور کیا چھوٹا آدمی کہیں بھی اپنا رد عمل ظاہر کرتا ہے؟ میں اس پرکوئی رد عمل ظاہرنہیں کرناچاہتا۔ سب جعلی ہے۔بس اتنا کہہ کر انھوں نے فون کاٹ دیا۔ بہار کی سیاست میں ذات پات ایک تلخ حقیقت ہے۔اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ آپ ترقی اور متحدہ معاشرے کے بارے میں کتنی ہی بات کرتے ہیں ، لیکن انتخابات آنے کے بعد ذات پات اپنا رنگ ظاہر کرتے ہیں۔ ایم ایل اے بھی کچھ ایسا ہی کررہا ہے۔بلکہ اب تومذہب کے نام پرووٹنگ ہورہی ہے۔جے ڈی یوایم ایل اے کی حیثیت سے ستیادیو سنگھ کی یہ دوسری اننگ ہے۔ انہوں نے 2010 میں این ڈی اے اتحادسے جے ڈی یو امیدوار کی حیثیت سے کامیابی حاصل کی تھی۔ اسی وقت 2015 میں جے ڈی یو-آر جے ڈی کے گرینڈ الائنس نے کرتھاسے جے ڈی یو امیدوارتشکیل دیا۔