جاپانی سفیر کی انوکھی شکایت، سعودیوں کی مہمان نوازی سے میرا وزن بڑھ گیاہے

ریاض:سعودی عرب میں متعین جاپانی سفیر فیومیو آوائی نے کہا ہے کہ سعودی عرب میں تعیناتی کے محض 4 ماہ بعد ہی اْن کا وزن تیزی سے بڑھنے لگا ہے جس کی وجہ یہاں کے شہریوں کی فراغ دلانہ مہمان نوازی ہے۔ عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق جاپان نے خلیجی ریاست میں وسیع تجربہ رکھنے والے ماہر سفارت کار فیومیو آوائی کو فروری میں سعودی عرب میں سفیر تعینات کیا تھا۔ خلیجی ممالک کے تجربے کو استعمال کرتے ہوئے فیومیو آوائی نہ صرف اعلیٰ حکام بلکہ عوام میں بھی گھل مل گئے ہیں۔سعودی عرب میں جاپان کے سفیر فیومیو آوائی نے ریاض میں مقامی اخبار کو دیئے گئے انٹرویو میں دلچسپ باتیں کیں۔ فیومیو آوائی نے بتایا کہ وہ فروری میں سعودی عرب پہنچے ہیں، لیکن انہیں اب ان کے کپڑے تنگ ہونے لگے ہیں۔ جاپانی سفیر نے اپنی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے مزید کہا کہ مجھے اپنی پتلونوں کو کمر سے ڈھیلا کروانا پڑ گیا تھا کیوں کہ میرا وزن تیزی سے بڑھ رہا ہے اور اس کی وجہ سعودی شہریوں کی فیاضانہ مہمان نوازی ہے جس میں مزیدار کھانے پیش کرتے ہیں۔فیومیو آوائی نے کہا کہ یہاں کے لوگوں کی پرجوش میزبانی اور لذیذ پکوان کی وجہ سے تمام احتیاطوں کو بالائے طاق رکھ دیتا ہوں اور رچ کر لذیذ پکوان کھاتا ہوں تاہم بیوی کے ٹوکنے پر اب چہل قدمی کرکے وزن کو قابو کرنے کی کوشش کر رہا ہوں۔ جاپانی سفیر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنی اہلیہ کے ساتھ ایک تصویر بھی شیئر کی جس میں وہ اور ان کی اہلیہ مقامی لباس زیب تن کیے ہوئے ہیں اور چہل قدمی کر رہے ہیں۔ ان کی اہلیہ نے حجاب سے سر کو ڈھانپ بھی رکھا ہے۔