جناب صدر! اسلام کو کسی بحران کا سامنا نہیں،آپ اپنی آنکھوں سے اسلاموفوبیا کا پردہ ہٹا کر دیکھیے،شیخ علی قرہ داغی کا فرانسیسی صدر کو جواب

قطر:عالمی اتحاد برائے علمائے مسلمین کے سکریٹری جنرل علی محی الدین قرہ داغی نے فرانسیسی صدر کے اس بیان پر سخت تنقید کی ہے جس میں انھوں نے یہ کہا ہے کہ اسلام کو عالمی سطح پر بحران کا سامنا ہے اور ساتھ ہی مسلمانوں کو شدت پسندی سے جوڑتے ہوئے ہوئے فرانس میں مسلم تنظیموں اور مساجد و مدارس پر نگرانی بڑھانے کی بات کی تھی۔ شیخ قرہ داغی نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر فرانسیسی صدر کو جواب دیتے ہوئے لکھا کہ’’جناب صدر! آپ ہمارے مذہب کے تئیں فکر مند نہ ہوں،کیوں کہ اسلام نے کبھی بھی کسی پرزور زبردستی نہیں کی اور نہ اپنے مخالفین پر تلوار اٹھائی اور طاقت کے زور پر انھیں اپنے تابع کیا‘‘۔ انھوں نے لکھا کہ’’اسلام دائمی طورپر موجود حقائق سے عبارت ہے اور تمام تر مشکلات کو حل کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے،کیوں کہ وہ دین خداوندی ہے ،ایسا سسٹم نہیں ہے جس کا انحصار منتخب ارکان کے مزاج اور ان کی بے عقلی پر ہو،اسلام عقل و دانش کے دائمی استحضار،دلیل اور انسانی نصرت و اعانت کا نام ہے‘‘۔انھوں نے لکھا کہ’’اسلام کسی بحران سے نہیں گزر رہاہے،کیوں کہ یہ کسی انسان کا بنایا ہوا مذہب نہیں ہے کہ ہمیں اس کے مٹنے یا گم ہونے کا خطرہ ہو،یہ دین الہی ہے اور دوسروں کے تمام تر مکرو تدبیراور اسلاموفوبیا کے باوجود پھیلتا ہی رہے گا،جناب صدر! ہمیں اپنے مذہب کے تئیں کسی قسم کا اندیشہ نہیں ہے اور ہمیں ایسے کسی شخص کی ضرورت نہیں جو یہ بتائے کہ ہمارا مذہب بحران میں مبتلا ہے‘‘۔

  • محمّد عارف ثقلینی نقشبندی ممبئی
    6 اکتوبر, 2020 at 11:11

    واہ بہت ہی عمدہ طرز ہے عالمی اور بین الاقوامی خبریں شائع کرنے کا

Leave Your Comment

Your email address will not be published.*