جموں و کشمیر کے لیے 1350 کروڑ کا معاشی پیکیج،ایک سال تک پانی،بجلی کے بل میں 50 فیصد رعایت

نئی دہلی:معاشی بحران کا سامنا کررہے جموں و کشمیر کی صنعتوں کو لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے 1350 کروڑ روپے کے معاشی پیکیج کا اعلان ہفتہ کوکیا۔ سنہا نے کہا کہ مجھے خوشی ہے کہ مالی مشکلات کا سامنا کرنے والے صنعت کاروں کے لئے 1350 کروڑ روپے کے معاشی پیکیج کا اعلان کیا گیا ہے۔ یہ پیکیج خود کفیل ہندوستان اور جموں و کشمیر انتظامیہ کے کیے گئے اقدامات کے علاوہ ہوگا۔لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہاکہ ہم نے رواں مالی سال میں غیر منظم کاروباری برادری سے تعلق رکھنے والے ہر قرضدارکو 5 فیصد سود میں رعایت دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ سہولت 6 ماہ کے لئے ہوگی۔ اس سے کاروباری افراد کو بڑی راحت ملے گی اور ریاست میں روزگار کے مواقع پیدا کرنے میں مدد ملے گی۔ جموں وکشمیر کے ایل جی منوج سنہا نے کہا کہ ایک سال کے لئے بجلی اور پانی کے بلوں میں 50 فیصد کی رعایت دی جائے گی۔ اس کے علاوہ تمام قرض دہندگان کے معاملے میں اسٹامپ ڈیوٹی کو مارچ 2021 تک چھوٹ دی جائے گی۔ جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ کریڈٹ کارڈ اسکیم کے تحت، ہینڈلوم اور دستکاری صنعت میں کام کرنے والے لوگوں کے لئے ایک لاکھ سے بڑھا کر دو لاکھ روپے کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انہیں سات فیصد سود کی چھوٹ بھی دی جائے گی۔ یکم اکتوبر سے جموں وکشمیر بینک نوجوانوں اور خواتین کاروباریوں کے لئے خصوصی ڈیسک بھی شروع کرے گا۔